.

پوپ فرانسیس وینزویلا کے معاملے میں ثالث بننے کو تیار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاپائے روم پوپ فرانسیس وینزویلا میں میں جاری سیاسی بحران کے حل کے لیے ثالثی کا کردار ادا کرنے پر آمادگی ظاہر کی ہے۔البتہ انھوں نے کہا کہ پہلے فریقین کو نزدیک لانے کے لیے ابتدائی اقدامات کیے جانے چاہییں۔

منگل کے روز صحافیوں سے بات کرتے ہوئے پوپ نے کہا کہ وینزویلا کے صدر نکولس مادورو نے ان کو ایک خط بھیجا ہے مگر وہ ابھی اسے پڑھ نہیں سکے۔

نکولس مادورو نے پیر کے روز اطالوی چینل اسکائی ٹی ج 24 سے بات کرتے ہوئے بتایا تھا کہ انھوں نے ایک خط پوپ کو ارسال کیا ہے تا کہ مکالمے کے عمل کو آسان اور مضبوط بنانے میں مدد حاصل کی جا سکے۔

بات چیت کے سابقہ ادوار کی ناکامی کی روشنی میں اپوزیشن کی جانب سے کہا جا رہا ہے کہ مادورو اس اقدام کے ذریعے احتجاج کو دبانے اور وقت حاصل کرنے کے خواہش مند ہیں۔

پوپ فرانسیس کے مطابق کسی بھی سرکاری وساطت کو سفارتی کوششوں میں آخری قدم سمجھنا چاہیے۔ انھوں نے کہا کہ ویٹی کن اور عالمی برادری کے دیگر ارکان کو بعض ابتدائی اقدامات کرنے چاہئیں اور اس ضمن میں ہر فریق کو دوسرے کے قریب آنے کے واسطے ہر ممکن کوشش کرنی ہو گی تا کہ بات چیت کا عمل شروع ہو سکے۔