فلسطینیوں کے حق خود ارادیت کی 'نفی' پرمبنی کوئی امن فارمولا قبول نہیں کریں‌ گے:عرب لیگ

فلسطینی اتھارٹی کے لیے ماہانہ 10 کروڑ ڈالر کی امداد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اتوار کے روز مصرکےدارالحکومت قاہرہ میں ہونے والے عرب لیگ کےوزراء خارجہ اجلاس میں اس بات پراتفاق کیاگیا ہےکہ فلسطینیوں کے حق خود اردایت کی نفی اورآزاد فلسطینی ریاست سے انکار پرمبنی کوئی بھی امن فارمولا قبول نہیں کیا جائے گا۔ اس موقع پرعرب ممالک نے تیونس میں ہونے والے عرب سربراہ اجلاس کےفیصلوں پرعمل درآمد کرتے ہوئے فلسطینی اتھارٹی کے بجٹ میں مدد کے لیے ماہانہ 10 کروڑ ڈالر کی رقم فراہم کرنے کا بھی اعلان کیا گیا۔

غیرمعمولی اجلاس کے اختتام پر جاری اعلامیے میں کہاگیا ہے کہ وزراء خارجہ اجلاس میں قضیہ فلسطین کے حوالے سے ہونےوالی پیش رفت پرتفصیلی غور کیاگیا۔ اس کےعلاوہ فلسطینی اتھارٹی کے سیاسی روڈ میپ اور اسے درپیش مالی بحران کے حل پر بات چیت کی گئی۔ اجلاس کی صدارت صومالیہ نے کی جب کہ فلسطینی اتھارٹی کے سربراہ محمودعباس بھی موجود تھے۔

اجلاس میں مسئلہ فلسطین سنہ 2002ء میں عرب ممالک کی طرف سےپیش کردہ امن روڈ میپ کی روشنی اورزمین برائے امن کے اصول کےتحت بین الاقوامی قراردادوں کے مطابق حل کرنے پر زور دیا گیا۔اعلامیے میں واضح کیا گیا ہے کہ عرب ممالک ایسا کوئی بھی امن منصوبہ قبول نہیں‌کریں گے جس میں فلسطینیوں کے حق خود ارادیت کو تسلیم نہ کیا جائے۔
اجلاس میں آزاد فلسطینی ریاست کے لیے اسرائیل سےچار جون 1967ء سے پہلے والی پوزیشن پر واپس جانے، مشرقی بیت المقدس کو فلسطینی ریاست کا صدر مقام تسلیم کرنے، فلسیطنی پناہ گزینوں کی واپسی اورانہیں معاوضہ ادا کرنے اور تمام فلسطینی اسیران کی فوری رہائی پر زوردیا گیا۔

عرب وزراءخارجہ نے صدر محمود عباس کی طرف سے سنہ 2018ء میں عرب لیگ میں پیش کردہ منصوبے کی مکمل حمایت کا اعلان کیا۔

عرب لیگ کے اجلاس میں القدس کے تحفظ اور اسے فلسطینی ریاست کا دارالحکومت بناتے ہوئے شہر کی عرب، اسلامی ، تاریخی اور قانونی تشخص کی بقاءکے لیے تمام ممکنہ وسائل بروئے کارلانے پر زوردیا گیا۔ اجلاس میں القدس پرصہیونی ریاست کے استعماری منصوبوں اور القدس کو اسرائیل کا دارالحکومت بنانے کے اعلانات اوراقدامات کو بھی مستردکردیا۔

اجلاس میں سلامتی کونسل کی قرارداد 2334 کے مطابق فلسطین میں‌یہودی آباد کاری روکنےاور جنرل اسمبلی کےفیصلوں کے مطابق فلسطینیوں کو تحفظ فراہم کرنے اور فلسطینی پناہ گزینوں کی امدادی ایجنسی'اونروا' کی مالی مدد جاری رکھنےپر زوردیاگیا۔

عرب لیگ کے وزراء‌خارجہ اجلاس میں شام کےمقبوضہ وادی گولان کو اسرائیل میں ضم کرنے کے اعلانات کو مسترد کردیا اورکہا کہ عرب ممالک وادی گولان کوصہیونی ریاست میں ضم کرنے کی تمام سازشوں‌کی مخالفت کرتےرہیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں