ٹرمپ انتظامیہ کانگرس کی اجازت کے بغیر ریاض کو اسلحہ کی فروخت کے لیے کوشاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ نے کہا ہے کہ اس نے کانگرس کو بتا دیا ہے کہ وہ ہنگامی حالات کے تحت حاصل اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے کانگرس کی منظوری کے بغیر سعودی عرب کو اسلحہ کی فروخت یقینی بنائے گی۔

امریکی ذرائع ابلاغ کے مطابق ٹرمپ انتظامیہ سعودی عرب اور مُتحدہ عرب امارات کو 7 ارب ڈالر مالیت کا اسلحہ فروخت کرے گی۔

اخبار 'نیویارک ٹائمز' کے مطابق وزیر خارجہ مائیک پومپیو اور دیگراعلیٰ حکام سعودی عرب کو اسلحہ کی فروخت روکنے کے بل کو غیر مؤثر کرنے اور روکی گئی دفاعی مصنوعات سعودی عرب کو مہیا کرنے کے لیے ہنگامی پلان پرعمل درآمد کرنا چاہتے ہیں۔

امریکی سینیٹر باب مینینڈیز کا کہنا ہے کہ کانگریس کو جمعہ کے روز بتایا گیا ہے کہ امریکی انتظامیہ سعودی عرب کو ہنگامی بنیادوں پر اسلحہ کی فروخت کا ارادہ رکھتی ہے۔ کانگرس میں اعتراضات کے باوجود ٹرمپ انتظامیہ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سمیت دیگر ملکوں‌ کو اسلحہ کی فروخت جاری رکھے گی۔

خیال رہے کہ امریکی وزارت خارجہ کو اسلحہ کی فروخت کی مانیٹرنگ پر اعتراض کا اختیار حاصل ہے۔ کانگرس کے قانون کے تحت امریکی انتظامیہ کے لیے ضروری ہے کہ وہ کسی بھی ملک کو اسلحہ کی فروخت سے قبل کانگرس کو مطلع کرے، تاہم ہنگامی حالت میں صدر کو یہ اختیار ہے کہ وہ کانگرس کو بتائے بغیر امریکا کے قومی سلامتی کے مفاد کے پیش نظر کسی بھی ملک کو اسلحہ فروخت کرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں