عراق کا قومی ترانہ 'وائلن' پر گانے پر مذہبی حلقے سیخ پا

شیعہ وقف بورڈ کی طرف سے فٹ بال فیڈریشن کے خلاف مقدمہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق میں مغربی ایشیائی فٹ بال چیمپیئن شپ کی افتتاحی تقریب کے موقع پر عراق کا قومی ترانہ وائلن پر گانے کے واقعے نے ملک کے مذہبی حلقوں میں سخت غم وغصے کی لہر دوڑا دی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق عراق کے مذہبی حلقوں بالخصوص اہل تشیع مسلک کی طرف سے وائلن پر قومی ترانہ گانے والی عراقی گلو کارہ اور فٹ بال فیڈریشن کے خلاف سخت رد عمل سامنے آیا ہے۔

مُنگل کے روز کربلا شہر میں منعقدہ اس تقریب میں ایک نوجوان گلوکارہ نے خلاف روایت قومی ترانہ وائلن پر پیش کیا جس کے بعد ملک بھر کے مذہبی اور سیاسی حلقوں کی طرف سے شدید رد عمل کا اظہار کیا گیا ہے۔ قومی ترانہ وائلن پر گانے پر سب سے زیادہ اہل تشیع مسلک کی طرف سے اعتراض کیا گیا ہے۔ اہل تشیع اس اقدام کو 'کربلا شہر کے تقدُس' کے قانون کی توہین قرار دیتے ہیں۔

عراق کے شیعہ وقف بورڈ کی طرف سے نیشنل فٹ بال فیڈریشن کے خلاف عدالت میں قومی ترانے کی توہین کا دعویٰ دائر کیا گیا ہے۔ مغربی ایشیائی ملکوں کے فٹ بال چیمپئین شپ کے منتظم کے خلاف دائر کردہ دعوے میں قومی ترانہ وائلن پر پیش کرنے کو مقامات مقدسہ کی توہین، اخلاق اور آداب عامہ کے خلاف قرار دیا گیا ہے۔

ادھر دوسری جانب کربلا کی مقامی حکومت کا کہنا ہےکہ فٹ بال مقابلے کی افتتاحی تقریب میں ترانے کے بعض فقروں کو وائلن پر گانے پر اعتراض سامنے آیا ہے تاہم اس میں حکومت کا کوئی کردار نہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں