.

انسداد منی لانڈرنگ، دہشت گردی پر سعودی عرب اور امارات کے درمیان مفاہمتی یادداشت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات میں مالیاتی معلومات کے یونٹ نے ہفتے کے روز ایک اعلان میں بتایا ہے کہ اس نے سعودی عرب میں Financial Investigation کی انتظامیہ کے ساتھ ایک مفاہمتی یادداشت پر دستخط کیے ہیں۔ اس اقدام کا مقصد منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی فنڈنگ کے انسداد کی پالیسیوں کو مضبوط اور جدید تر بنانا ہے۔

متحدہ عرب امارات کی سرکاری خبر رساں ایجنسی (وام) کے مطابق امارات کے مرکزی بینک کے گورنر اور منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی فنڈنگ کے انسداد کے لیے قومی کمیٹی کے سربراہ مبارک راشد المنصوری، مرکزی بینک کے نائب گورنر سیف ہادف الشمسی اور مالیاتی معلومات کے یونٹ کے قائمقام سربراہ علی فیصل باعلوی نے نے سعودی فنانشل انویسٹی گیشن کی انتظامیہ کے ڈائریکٹر میجر جنرل عتیبی بن خضر المالکی اور ان کے ہمراہ آنے والے وفد کا استقبال کیا۔

مفاہمتی یادداشت پر دستخط سے پہلے فریقین کے درمیان اجلاس کا انعقاد ہوا۔ اجلاس میں امارات اور سعودی عرب کے درمیان قریبی اور مضبوط تعلقات زیر بحث آئے جن کا مقصد منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی فنڈنگ کا مقابلہ کرنے سے متعلق امور میں عالمی برادری کے ساتھ کوششوں اور مسلسل تعاون کو یکجا کرنا ہے۔

بعد ازاں علی فیصل باعلوی اور میجر جنرل عتیبی بن خضر المالکی نے مفاہمتی یادداشت پر دستخط کیے۔ اس یادداشت کے تحت دونوں ملکوں کے درمیان منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی فنڈنگ سے متعلق جرائم کے حوالے سے مالیاتی معلومات کے تبادلے کے واسطے مشترکہ عمل اور تجربے کو کام میں لایا جائے گا۔