اسرائیل کی شام میں اسدی فوج اور ایرانی ملیشیاؤں کے ٹھکانوں پر بم باری،12 جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شام میں صدر بشارالاسد کی حکومت نے دعویٰ کیا ہے کہ اس کے فضائی دفاعی نظام نے دارالحکومت دمشق اور جنوبی صوبہ درعا کی فضائی حدود میں اسرائیل کا میزائل حملہ پسپا کر دیا ہے جبکہ برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے اطلاع دی ہے کہ اس حملے میں ایران نواز بارہ غیرملکی اور شامی جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

رصدگاہ کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمان نے بتایا ہے کہ جمعرات کو علی الصباح اسرائیل کے فضائی حملے میں دمشق کے جنوب میں واقع علاقہ کسوہ میں سات غیرملکی جنگجو ہلاک ہوئے ہیں۔اس علاقے میں ایرانی اور ایران نواز غیرملکی جنگجو موجود تھے۔جنوبی صوبہ درعا کے علاقہ ازرع میں ایران کے حمایت یافتہ ایک شامی گروپ کے پانچ ارکان ہلاک ہوگئے ہیں۔

شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی سانا کے مطابق اسرائیل نے مقبوضہ گولان کے علاقے کی فضا سے دمشق کے دیہی علاقے کی جانب حملہ کیا تھا مگردشمن کے ہتھیاروں کو مار گرایا گیا۔

شامی حکومت کے میڈیا نے بتایا ہے کہ اسرائیلی بم باری میں الکسوہ، مرج السلطان اور دمشق کے نزدیک بغداد پُل کے علاوہ جنوبی صوبہ درعا میں واقع علاوہ ازرع کو نشانہ بنایا گیا۔

شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے دمشق اور اس کے نواحی دیہی علاقوں میں دھماکوں کی آوازیں سننے کی اطلاع دی ہے۔اس نے مزید بتایا ہے کہ اسرائیلی بم باری میں الکسوہ اور دمشق کے اطراف صدر بشارالاسد کی وفادارفوج اور ایرانی ملیشیاؤں کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا گیا ہے اور ان علاقوں میں اسدی فوج اور ایرانی ملیشیاؤں کی بیرکوں پر بڑی تعداد میں میزائل آ کر گرے اور بعض بیرکوں میں آگ لگ گئی۔

رصدگاہ کے مطابق بشار حکومت کا فضائی دفاعی نظام بعض میزائلوں کو مار گرانے میں کامیاب رہا۔ تاہم میزائلوں کی اکثریت اپنے اہداف کو نشانہ بنانے میں کامیاب رہی ہے۔

شام میں 2011ء میں خانہ جنگی کے آغاز کے بعد سے اسرائیلی فوج نے ایران اور اس کی آلہ کار ملیشیاؤں کے خلاف کارروائی کے نام پر فضائی حملوں کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔ 14 جنوری کو اسرائیلی طیاروں نے شام کے وسط میں واقع "التيفور" کے فوجی اڈے کو نشانہ بنایا تھا۔

اس سے قبل شامی رصدگاہ نے بتایا تھا کہ گذشتہ سال 20 نومبر کو اسرائیلی فضائیہ نے دمشق میں اسدی فوج اور ایرانی القدس فورس کے ٹھکانوں پر بمباری کی تھی۔ اس کے نتیجے 23 جنگجو مارے گئے تھے۔ان میں 16 غیر ملکی تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں