.

سعودی عرب:'دارالقلم'عربی رسم الخط مرکز کا نام سعودی ولی عہد کےنام سے موسوم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں عربی زبان کےر سم الخط کی ترویج اور عربی زبان کے فروغ کے لیے مدینہ منورہ میں قائم کردہ 'دارالقلم' مرکز کانام سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز آل سعود کے نام سے موسوم کیا گیا ہے۔

'العربیہ ڈاٹ نیٹ' کے مطابق 'عربی رسم الخط' کے لیے قائم کردہ دارالقلم مرکز کا نام سعودی ولی عہد کے نام سے موسوم کرنے کی تجویز سعودی وزیر ثقافت شہزادہ بدر بن عبداللہ بن فرحان کی جانب سے پیش کی گئی تھی۔ اس تجویز کا مقصد ولی عہد کی جانب سے عربی رسم الخط کی ترویج واشاعت ، آرٹ اور آرٹسٹوں کی بھرپور پذیرائی کی کوششوں کا اعتراف ہےکرنا ہے۔

دارالقلم جس کا نام تبدیل کرکے'محمد بن سلمان عربی رسم الخط مرکز' رکھا گیا ہے وزارت ثقافت کی زیرنگرانی کام کرے گا اور اسے شاہ عبدالعزیز مرکز کی طرف سے بھی تعاون فراہم کیا جائے گا۔ یہ مرکز عربی زبان کے متنوع رسم الخط کے فروغ کے کیے خطاطوں کوعالمی پلیٹ فارم مہیا کرے گا۔

شہزادہ محمد بن سلمان عالمی عربی رسم الخط مرکز کے تحت مدینہ منورہ میں ایک میوزیم اور نمائش گاہ بھی قائم کی جائے گی۔ اس کے علاوہ عرب اور مسلمان خطاطوں کے لیے ایک فورم قائم کیا جائے گا جہاں دنیا بھر اور عرب ممالک میں عربی رسم الخط کے حوالے سے ہونے والے کام کو زیادہ منظم اور مربوط انداز میں آگے بڑھانے کی کوشش کی جائے گی۔

خیال رہے کہ مدینہ منورہ میں عربی رسم الخط کے فروغ کے لیے'دارالقلم' مرکز سنہ 2013ء میں قائم کیا گیا تھا۔ کچھ عرصہ قبل اسے سعودی وزارت ثقافت کا حصہ بنا دیا گیا۔ حکومت نے ویژن 2030ء کے تحت اس مرکز کو بھی جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے اور عربی زبان کے رسم الخط کو مختلف اسالیب میں پیش کرنے کے لیے زیادہ بہتر اور موثرا نداز میں آگے بڑھانے کا عزم کیا ہے۔ دارالقلم مرکز کی سعودی ولی عہد کےنام کے ساتھ تبدیلی بھی اس کا حصہ ہے۔