.

لیبیا : ترکی کی جانب سے اجرتی جنگجوؤں کو تربیت ، طرابلس میں گرین زون

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کی فوج کے ایک سینئر عہدے دار بریگیڈیر جنرل خالد المحجوب کا کہنا ہے کہ وفاق حکومت کے زیر انتظام اجرتی جنگجو دارالحکومت طرابلس میں ترکی کا گرین زون قائم کر رہے ہیں۔ اتوار کی شب العربیہ سے ٹیلی فون پر گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ اس اقدام سے لیبیا کے عوام کاے اندر غم وغصے کی لہر بھڑک گئی ہے۔ المحجوب کے مطابق ترک اہل کار لیبیا کی فورسز کے بدلے شامی اور غیر ملکی اجرتی جنجگوؤں کو تربیت دے رہے ہیں۔

لیبیائی فوج کے سینئر عہدے دار نے باور کرایا کہ دارالحکومت میں موجود ملیشیاؤں کے درمیان بڑے تنازعات پائے جاتے ہیں۔

ادھر لیبیا کے دارالحکومت طرابلس میں سیکورٹی ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ وفاق کے زیر انتظام مسلح ملیشیاؤں اور ترکی کی جانب سے لیبیا منتقل کیے جانے والے شامی اجرتی جنگجوؤں کے درمیان بڑے پیمانے پر اختلافات موجود ہیں۔

ذرائع نے واضح کیا ہے کہ وفاق حکومت کی وزارت داخلہ کے زیر انتظام اسپیشل فورسز نے چاڈ سے تعلق رکھنے والے اجرتی جنجگوؤں کو حراست میں لے لیا۔ یہ کارروائی لیبیائی شہریوں کی جانب سے موصول ہونے والی شکایات کے بعد عمل میں آئی۔ ان شکایات میں کہا گیا تھا کہ مختلف ٹولیوں کی جانب سے شہریوں کے گھروں کو لوٹ مار کا نشانہ بنایا گیا۔ اس صورت حال نے جلد ہی مسلح تصادم کے حوالے سے خطرے کی گھنٹی بجا دی ہے۔ اس کے علاوہ شہر کے لوگوں نے اجرتی جنگجوؤں سے تنگ آ کر مظاہرے کیے ہیں جن میں یہ مطالبہ کیا گیا ہے کہ ان غیر ملکی اجرتی جنگجوؤں کو بے دخل کیا جائے۔

دوسری جانب لیبیا کی قومی فوج کے سربراہ خلیفہ حفتر نے ایک بار پھر اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ لیبیا میں ترکی کی مداخلت کا راستہ روکا جائے گا۔ حفتر نے یہ بات ہفتے کے روز فوج کے یونٹوں سے خطاب کے دوران کہی۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ " تُرک ،،، لیبیا میں 300 برس تک رہے .. لیبیا کے لوگوں کو ان میں شر کے سوا کچھ نظر نہ آیا"۔

حفتر کا مزید کہنا تھا کہ " لیبیا کے لوگ ہر استعمار کے لیے گھات لگا کر بیٹھے ہیں۔ استعماری عناصر کو بے دخل کرنا بنیادی ہدف ہے۔ ہم دوبارہ سے استعماری طاقتوں کے ماتحت نہیں آنا چاہتے .. ماضی میں جو کچھ ہوا وہ ہمارے لیے کافی ہے"۔

جنرل خلیفہ حفتر نے باور کرایا کہ فوج ترکی کی جانب سے وفاق حکومت کی فورسز کے شانہ بشانہ لڑنے کے لیے لیبیا بھیجے جانے والے اجرتی جنگجوؤں کو بھرپور سبق سکھائے گی۔