.

ایران پر عاید کردہ اسلحہ کی پابندیاں اٹھانا خطرناک ہو گا: یمن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی آئینی حکومت نے خبردار کیا ہے کہ ایران پر اسلحہ کی خرید و فروخت پر عاید کی گئی عالمی پابندیاں اٹھنے کے خطرناک نتائج برآمد ہو سکتے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق یمنی حکومت کی طرف سے جاری ایک بیان میں خبردار کیا گیا ہے کہ ایران کی فوجی صنعت اور جنگی ساز و سامان پر عاید کردہ پابندیاں اٹھیں تو ان کے خطرناک نتائج سامنے آئیں گے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ اسلحہ کی پابندیاں اٹھانا ایرانی دہشت گرد رجیم کو مفت کا تحفہ دینے کے مترادف ہو گا۔ اسلحہ کی پابندیاں اٹھتے ہی ایران کی خطے میں تخریبی اور دہشت گردانہ سرگرمیاں مزید بڑھ جائیں گی۔

یمنی حکومت نے ایران کو روایتی ہتھیاروں کے حصول پرعاید کردہ پابندیوں میں توسیع ناگزیر قرار دیا کہا کہ ایران پہلے ہی خطے اور عالمی امن کےلیے خطرہ ہے۔ اس لیے ایران پر اقتصادی پابندیوں کے ساتھ ساتھ اسلحہ کے حصول پر پابندی برقرار رہنی چاہیے۔

خیال رہے کہ اقوام متحدہ اور عالمی برداری کی طرف سے ایران پر عاید کردہ اسلحہ کی خرید و فروخت پر پابندی رواں سال 18 اکتوبر کو ختم ہو رہی ہے۔ امریکا اور اس کے اتحادی ممالک ایران پر اسلحہ کی پابندیوں میں مزید توسیع کی کوشش کر رہے ہیں۔

اسی ضمن میں یمنی وزیر اطلاعات معمرالاریانی نے کہا کہ ایران پر اسلحہ کی پابندیاں ختم کرنا خطے میں جاری تنازعات کی آگ پر تیل چھڑکنے کے مترادف ہوگا۔ ان کا کہنا تھا کہ ایران پر اسلحہ کی پابندیاں اٹھنے کا فائدہ لبنانی حزب اللہ، القاعدہ، داعش اور اس جیسے دوسرے علاقائی دہشت گرد گروپوں کو ہو گا۔