.

حماس نےغزہ پراسرائیلی حملوں میں اپنے متعدد اعلیٰ کمانڈروں کی شہادت کی تصدیق کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی مزاحمتی تنظیم حماس نے غزہ پر اسرائیلی فوج کے فضائی حملوں میں اپنے متعدد اعلیٰ کمانڈروں کی شہادت کی تصدیق کی ہے۔ان میں غزہ شہر میں حماس کا عسکری کمانڈر بھی شامل ہے۔

اسرائیل کی شین بیت سکیورٹی ایجنسی نے دعویٰ کیا ہے کہ فضائی حملوں میں حماس کی 16 شخصیات ماری گئی ہیں۔ان میں حماس کا ایک سینیر کمانڈر اور ہتھیار بنانے کے ماہرین بھی شامل ہیں۔اسرائیلی طیاروں نے ان کی کمانڈ پوسٹ کو نشانہ بنایا تھا۔

شین بیت کے مطابق اس فضائی حملے میں حماس کے غزہ شہر میں بریگیڈ کمانڈرباسم عیسیٰ ،حماس کے سائبر اور میزائل ٹیکنالوجی کے سربراہ جمعہ طلحہ اور اسلحہ سازی یونٹ کے 13 ارکان مارے گئے ہیں۔

باسم عیسیٰ اسرائیل کی 2014ء میں غزہ پر مسلط کردہ جنگ کے بعد حماس کے شہید ہونے والے سب سے اعلیٰ کمانڈر ہیں۔حماس نے ایک بیان میں ان تمام شہادتوں کی تصدیق کی ہے۔

اسرائیلی فوج نے گذشتہ تین روز میں غزہ پرسیکڑوں فضائی حملوں کیے ہیں۔ان میں فلسطینیوں کی شہادتوں کی تعداد48 ہوگئی ہے جبکہ حماس اور دوسری فلسطینی تنظیموں کے راکٹ حملوں میں اسرائیل میں پانچ افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

اسرائیلی فوج نے بدھ کو بھی غزہ شہر پرمتعدد فضائی حملے کیے ہیں اوران میں کثیرمنزلہ اپارٹمنٹ عمارتوں کو نشانہ بنایا ہے۔اسرائیلی فوج نے یہ دعویٰ کیا ہے کہ ان عمارتوں میں فلسطینی مزاحمت کار روپوش تھے۔ایک اور فلسطینی مزاحمتی تنظیم اسلامی جہاد نے اسرائیلی فوج کے فضائی حملے میں اپنے تین کمانڈروں کی شہادت کی تصدیق کی ہے۔