.

بحرین کی اپنے شہریوں کو فوری طورپرلبنان چھوڑنے کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بحرین کی وزارت خارجہ نے لبنان میں موجود اپنے تمام شہریوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ فوری طور پروطن لوٹ آئیں۔

بحرین نے یہ فیصلہ لبنانی وزیراطلاعات جارج قرداحی کے سعودی عرب اوریمن جنگ میں متحدہ عرب امارات کے کردارکے بارے میں تنقیدی بیان کے ردعمل میں کیا ہے۔خلیجی عرب ممالک کے خلاف لبنانی وزیرکے اس متنازع بیان سے سفارتی بحران پیدا ہوچکا ہے۔

اس سے قبل سعودی عرب نے ان کے بیان کے ردعمل میں لبنان کے ایلچی کوالریاض سے نکال دیا تھا،بیروت سے اپنےسفیرکو واپس بلا لیا ہے اور لبنان کی تمام درآمدات پرپابندی عایدکردی ہے۔

بحرین اور کویت نے بھی اس کی پیروی میں اپنے سفیروں کوواپس بلالیا ہےاور متحدہ عرب امارات نے بیروت سے اپنے سفارت کاروں کے ساتھ لبنان میں مقیم اپنے شہریوں کوواپس بلا لیا ہے اور اپنے شہریوں کے لبنان جانے پر تاحکم ثانی پابندی عاید کردی ہے۔

لبنانی وزیراطلاعات جارج قرداحی نے اگست میں ایک انٹرویو میں ایران کے حمایت یافتہ حوثی باغیوں کے خلاف عرب اتحاد کی یمن میں فوجی مداخلت کو’’بے سود‘‘ قراردیا تھا۔مسٹرقرداحی نے گذشتہ سوموار کو نشر کیے گئے اس متنازع انٹرویو میں کہا تھا کہ’’حوثی بیرونی جارحیت کے خلاف اپنادفاع کر رہے ہیں۔‘‘