پولش خاتون ڈاکٹر سعودی عرب میں عقاب میلے کے مقابلے میں شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں عقابوں کے بین الاقوامی عقاب میلے کے مقابلے میں شامل ایک یورپی خاتون ڈاکٹر بھی ہیں۔ پولش فالکنر میلڈا شارلٹ نے شاہ عبدالعزیز عقاب فیسٹیول میں فالکنرز کے ساتھ الملواح مقابلے میں حصہ لیا۔ یہ عقاب سعودی عرب کے شمال میں ملھم کے مقام پر جاری ہے۔

پولش میلاڈا نے پہلی بین الاقوامی شرکت پراپنی بے حد خوشی کا اظہار کیا۔ "العربیہ ڈاٹ نیٹ" کودیئے گئے انٹرویو میں پولش خاتون نے بتایا کہ اس کی شروعات بطور ماہر حیوانات اور جانوروں میں اس کی دلچسپی کی وجہ سے ہوئی۔ وہ کہتی ہیں کہ اپنے کام کے ذریعے میں نے عقاب کی پرورش کرنےوالوں اور عقابوں کے درمیان دلچسپی اور ان کی دیکھ بھال میں دلچسپی اور خاص تعلق نوٹ کیا۔ یہاں تک کہ میں نے انٹرنیٹ پر فالکن کو مزید تلاش کرنا شروع کی۔ نیٹ بہت سی معلومات سیکھیں۔ سنہ 2013 میں میں نے پہلا شاہین خریدا۔ یہ حر کیٹی گری میں شامل تھا۔ اس کے ایک سال بعد میں نے (شیہانہ) نسل کا شاہین خرید کیا۔

ہرسال 15 شاہین

میلاڈا نے بتایا کہ وہ ہر سال تقریباً 15 فالکن تیار کرتی ہے۔ اس سال اس نے صرف آٹھ فالکن تیار کیے۔ اس کے بہت سے دوست اور گاہک ہیں جو ان سے خریدتے ہیں۔ ریسنگ میں اس کی دلچسپی 3 سال پہلے شروع ہوئی تھی۔ اس نے کہا کہ میں نےشاہ عبدالعزیز فالکن فیسٹیول میں خواتین کی شرکت کے امکانات کو جاننا چاہتی تھی۔ یہ میرے لیے بہت معنی رکھتا تھا اور میں نے بغیر کسی ہچکچاہٹ کے شرکت کرنے کا فیصلہ کیا۔اس میلے میں یہ میری پہلی شرکت ہے اور میں دو شاہینوں کے ساتھ شریک ہوں۔

خیال رہے کہ میلاڈا نے اس میں ’حر‘ کیٹی گری کے تحت گیارہویں راؤنڈ میں حصہ لیا اپنے دو شاہین پیش کیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں