طائف کے مشہور گلاب چُننے کا آغاز، دُنیا کے مشہور ترین پھولوں کی کہانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

طائف کے گلاب کی کاشت کئی سالوں پر محیط ایک تاریخی کہانی ہے۔ ان پھولوں نے اپنی شناخت طائف کے علاقے سے حاصل کی جو کہ دُنیا میں منفرد رنگ اور خوشبو کے ساتھ گلاب پیدا کرنے کے لیے مشہور ہے۔ طائف شہر پھولوں کی کاشت میں باقی سعودی عرب سے ممتاز ہے۔ ان پھولوں سے پرفیوم تیار کی جاتی ہے۔

اس تناظرمیں طائف کے گلاب کی کاشت اور پیداوار کے ماہر محسن الثقفی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ مارچ کے آغاز کے ساتھ ہی طائف کے گلاب چُننے کا موسم شروع ہو جاتا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کو انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ طائف میں کسانوں نے جنوری کےشروع سے درخت کاٹ دیے تاکہ مارچ کے آغاز میں فصل کی کٹائی شروع ہو جائے۔

انہوں نے مزید کہا کہ فصل کی کٹائی ایک دن میں تین مراحل سے گزرتی ہے۔ پہلا مرحلہ طلوع آفتاب سے پہلے "چننے" سے ہوتا ہے۔ دوسرا مرحلہ "وزن" سے ہوتا ہے تاکہ فصل کی مقدار معلوم کی جاسکے۔تیسرا مرحلہ ان پھولوں سے عرق کشید کرنے کا ہوتا ہے۔

انہوں نے وضاحت کی کہ بہتر ہے کہ آخری عمل کے لیے تانبے کے ایسے برتنوں کا استعمال کیا جائے جس میں ایک ہی وقت میں 10 یا 20 ہزار پھول سما سکتے ہوں۔

گلاب کی کاشت کا آغاز

مقامی کسان اور گلاب کے ماہر الثقفی نے نشاندہی کی کہ وہ 25 سال سے گلاب کی کاشت اور چناؤ کر رہے ہیں۔ گلاب کا عرق اور اس کا تیل تیار کر رہے ہیں۔ گلاب کی کٹائی صبح کے وقت شروع ہوتی ہے اور پھر کٹائی کو فیکٹری میں منتقل کر دیا جاتا ہے۔ وہاں پھولوں کو تانبے کے برتنوں میں رکھا جاتا ہے۔ اس کے بعد اس میں پانی ڈالا جاتا ہے جس سے کشید کا عمل شروع کیا جاتا ہے اور پھولوں میں موجود چکنائی کو الگ کیا جاتا ہے تاکہ خالص عرق حاصل کیا جا سکے۔

اس نے بتایا کہ ایسے لوگ بھی ہیں جو ان گلابوں سے کریم اور باڈی لوشن بھی بناتے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں محسن ثقفی نے اس بات پر بھی زور دیا کہ "گلاب کی کاشت میں خاص مہارت اور تکنیکی طریقے اختیار کیے جاتے ہیں۔ کسان اس کی مسلسل کٹائی کرتا ہے اور کسان گلاب کے درخت کو زمین کے قریب رکھنے کے خواہشمند ہیں تاکہ اس کی اونچائی ایک سے ڈیڑھ میٹر زیادہ نہ ہو۔ اسے خصوصی مشینوں سے تراشنا ہے جس کا مقصد درخت کو زیادہ سے زیادہ پھول دار بنانا ہے۔

مشہور طائفی گلاب

یہ قابل ذکر ہے کہ طائف گورنری گلاب کی کاشت اور پیداوار کے لیے مشہور ہے جو خلیج اور عرب دنیا میں عام طور پر ضروری تیلوں کی سب سے زیادہ تجارت کی جانے والی قسم ہے۔

اہل طائف کے معروف گھرانے بھی اپنی کھیتی، کشید اور خریدوفروخت کے حوالے سے مشہور تھے۔ انہیں یہ پیشہ ان کے آباؤاجداد سے انہیں ملا تھا۔

طائف اوراس کے مضافات میں طائف کے گلاب کے 2000 سے زائد فارم ہیں جو روزانہ 200 ملین سے زیادہ گلاب پیدا کرتے ہیں کیونکہ ہر درخت فصل کی کٹائی کے پورے موسم میں روزانہ اوسطاً 250 گلاب پیدا کرتا ہے جو کہ تقریباً 45 دن تک جاری رہتا ہے۔

اس کے علاوہ گلاب کی خوشبو اور اس کا پانی سال میں دو بار خانہ کعبہ کو دھونے اور اس کی دیواروں کو پینٹ کرنے کے لیے ضروری اجزاء ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں