مقبوضہ غرب اردن میں فائرنگ سے اسرائیلی فوجی زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے شمالی شہر طولکرم میں منگل کی صبح فائرنگ کے واقعے میں ایک اسرائیلی فوجی کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان اویچائی ادرعی نے پیر کو انکشاف کیا کہ ابتدائی تحقیقات سے ظاہر ہوتا ہے کہ مغربی کنارے کے شہر طولکرم کے قریب جو کچھ ہوا وہ فائرنگ کا حملہ نہیں تھا۔

ادرعی نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر بتایا کہ "ابتدائی تحقیقات سے یہ واضح ہے کہ اس وقت بحث گولی چلانے کے بارے میں نہیں ہے تاہم ان کا کہنا تھا کہ فائرنگ کے حالات کا ابھی بھی جائزہ لیا جا رہا ہے۔

دریں اثناء العربیہ کے نامہ نگار نے اطلاع دی ہے کہ غلطی سے دو اسرائیلی فوجوں کے درمیان فائرنگ ہوئی اور اس میں ایک فوجی زخمی ہو گیا۔

یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب ادرعی نے پیر کو پہلے اعلان کیا تھا کہ طولکرم کے قریب فائرنگ کا حملہ ہوا تھا۔ انہوں نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ طولکرم کے قریب "سیون ایریا" میں فائرنگ کے حملے کی اطلاعات ہیں۔

اسرائیلی پولیس اور طبی عملے کے مطابق اتوار کی صبح وسطی یروشلم میں ایک بس پر مسلح حملے کے نتیجے میں 8 افراد کے زخمی ہو گئے تھے۔ ان میں سے دو کی حالت تشویشناک بیان کی جاتی ہے۔

اسرائیلی پولیس نے حملہ کرنے کے شبہ میں ایک شخص کو گرفتار کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اس کے ترجمان کان ایلی لیوی نے پبلک ریڈیو کو بتایا کہ حملہ کے چند گھنٹے بعد یہ شخص ہمارے ہاتھ میں تھا۔

دریں اثنا، اسرائیلی وزیر اعظم یائر لپیڈ نے کابینہ کے ہفتہ وار اجلاس کو بتایا کہ حملہ آور اکیلا ہی تھا اور وہ القدس کا رہائشی ہے اور ماضی میں بھی ایسے حملے کر چکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں