امریکہ کے ساتھ مشقوں میں "تہران کی دھمکیوں" کو بھی مد نظر رکھا: یائر لاپید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیر اعظم یائر لاپید نے بدھ کے روز امریکی فوج کے ساتھ اسرائیلی فوج کی مشترکہ مشق کا معائنہ کیا اور اعلان کیا کہ اسرائیل کو اپنے دفاع کے لیے اپنے تصور کے مطابق کام کرنے کا حق حاصل ہے۔

بعد ازاں انھوں نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر کہا کہ انھوں نے امریکی افواج کے ساتھ مشق کے کورس کا معائنہ کرنے کے لیے فضائیہ سے منسلک ایک کنٹرول سینٹر کا دورہ کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ مشق امریکی فوج کے ساتھ ان مشترکہ مشقوں کے سلسلے کا ایک حصہ ہے جن میں بالخصوص ایرانی خطرے اور خطے میں ابھرتے ہوئے دیگر خطرات کے منظر ناموں کو مد نظر رکھ کر کام کیا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آرمی چیف آف سٹاف، ایویو کوچاوی، اور فضائیہ کے کمانڈر نے "مختلف منصوبوں کا جائزہ لیا اور وزیر اعظم کے ساتھ آپریشنل فائلوں پر تبادلہ خیال کیا، جن میں سر فہرست اسرائیل کو ایران سے درپیش خطرے کو ہی رکھا گیا۔

فوجی صلاحیتوں میں اضافہ

اسرائیلی وزیر اعظم نے مزید کہا کہ انہوں نے طویل فاصلے تک سرگرمیوں اور چیکنگ کرنے کے منظوبے کا جائزہ لیا، انٹیلی جنس جمع کرنے اور حملے کے شعبوں میں فوج کی صلاحیتوں کا بھی معائنہ کیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ اور دیگر ممالک کے ساتھ سٹریٹجک تعاون خطے بالخصوص ایران سے درپیش خطرات کے تناظر میں اسرائیلی فوجی صلاحیتوں میں اضافہ کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں