سعودی ٹیم اور النصر کلب کے گول کیپر سالم مروان کی یاد منائی گئی

مرحوم سالم نے پہلی سعودی قومی ٹیم کے ساتھ 44 سے زائد بین الاقوامی میچوں میں حصہ لیا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی قومی ٹیم کے پہلے گول کیپر اور النصرہ کلب کے کپتان سالم مروان کی یاد منائی گئی ہے۔ سالم مروان کا 64 برس کی عمر میں انتقال طویل علالت کے بعد ٹریفک حادثے کے نتیجے میں ہوا۔ وہ 1991ء سے کواڈریپلجیا میں مبتلا ہونے کے بعد نقل و حرکت سے محروم ہوگئے تھے۔ جس کی وجہ سے وہ 22 سال سے زیادہ عرصہ بستر پر رہے۔

Advertisement

سالم مروان نے گزشتہ صدی کی ستر کی دہائی میں عالمی "النصر کلب" میں شمولیت اختیار کی۔ اس کے ساتھ 9 سے زائد چیمپئن شپ جیتیں۔ انہوں نے پہلی سعودی قومی ٹیم کے ساتھ 44 سے زائد بین الاقوامی میچوں میں شرکت کی۔

ان میچوں میں سے چار میچ گلف کپ ٹورنامنٹس کے تھے۔ اسی طرح دو میچز ورلڈ کپ اور دو میچز ایشین گیمز کے بھی شامل ہیں۔ سالم مروان پنالٹی ککس سے نمٹنے میں اپنے دلیرانہ طریقے سے جانے جاتے تھے۔ میڈیا نے پینالٹی ککس روکنے کے حوالے سے ’’ اسد‘‘ یعنی شیر کا خطاب دیا تھا۔

سعودی اور خلیجی کھیلوں کی برادری نے بین الاقوامی کھلاڑی سالم مروان کے لیے سوگ منایا۔ ان کی موت کی خبر ایک "ہیش ٹیگ" میں پھیل گئی جس پر سماجی رابطے کے پلیٹ فارم "ٹویٹر" پر بڑی پوسٹس دیکھنے کو ملیں۔

سرکاری النصر اکاؤنٹ نے اشارہ کیا کہ وہ آج دوپہر کی نماز کے بعد الحیر روڈ پرنس فہد بن محمد مسجد میں مرحوم کے لیے دعا کریں گے۔ بہت سے سابق اور موجودہ سعودی سپورٹس سٹارز نے ان کی موت پر گہرے دکھ کا اظہار کیا۔ ہلالی کے سابق کپتان سٹار صالح النعیمہ اداس نظر آئے ۔ انہوں نے اپنی ٹوئٹر اکاؤنٹ پر کہا "ہم خدا کے ہیں اور اسی کی طرف لوٹیں گے ۔ ہر آنکھ اشکبار ہے اور دل غمگین ہے اور میں تیری جدائی کا غمگین ہوں میرے بھائی سالم۔ یا اللہ اس پر جو گزری اس کا کفارہ دے اور اس کے درجات بلند فرما، اس کی مغفرت فرما اور اس پر رحم فرما۔‘‘

اور النصر کلب کے صدر مسلی آل معمر نے اپنے گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے اپنے ٹویٹر پیج پر کہا " اے اللہ ہم آپ سے سالم مروان کے لیے رحمت اور مغفرت کی دعا کرتے ہیں۔‘‘

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں