غزہ پر اسرائیلی حملے کی وسیع پیمانے پر مذمت، اسلامی جہاد سے حساب چکتا کیا: اسرائیل

آپریشن اچھی شروعات: اسرائیلی وزیر دفاع، عالمی قوانین کی خلاف ورزی: مصر، تنازع بڑھ جائے گا: فلسطین، عالمی برادری ذمہ داری ادا کرے: عرب پارلیمان، بدلہ لیں گے: اسلامی جہاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

منگل کی صبح غزہ کی پٹی پر 40 اسرائیلی طیاروں کی بمباری میں تحریک اسلامی جہاد کے تین کمانڈرز سمیت 13 افراد جاں بحق ہوگئے۔ اس صہیونی حملے کی وسیع پیمانے پر مذمت کی گئی ہے۔ مصر نے اسے عالمی قوانین کی صریح خلاف ورزی قرار دے کر مسترد کردیا۔ فلسطینی اتھارٹی نے خبردار کیا ہے کہ ایسی کارروائیوں سے تنازع بڑھ جائے گا۔

Advertisement

غزہ پر اسرائیلی حملے کی وسیع پیمانے پر مذمت کے دوران ہی صہیونی ریاست نے اپنی جارحیت کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم نے ’’اسلامی جہاد‘‘ کے رہنماؤں سے اپنا حساب چکتا کردیا ہے۔ لاپڈ نے ٹویٹر پر اپنے ایک ٹویٹ میں کہا کہ اسرائیلی ردعمل مناسب وقت اور جگہ پر کیا گیا۔ انٹیلی جنس معلومات اکٹھی کرنے اور غزہ میں جہادی رہنماؤں کی نگرانی کرتے ہوئے ان کے ساتھ حساب کو چکتا کردیا گیا ہے۔

پالیسی تبدیل کرنے کا وقت آگیا: بن گویر

آج منگل کو اخبار "ٹائمز آف اسرائیل" نے قومی سلامتی کے وزیر اتمار بن گویر کے حوالے سے کہا ہے کہ غزہ کی پٹی میں اسرائیلی افواج کا شروع کیا گیا سیکورٹی آپریشن "ایک اچھا آغاز" ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ پٹی میں اپنی پالیسی تبدیل کرنے کا وقت ہے۔ بین گویر نے کہا کہ "میں وزیر اعظم کو غزہ میں آپریشن کی پیشگی مبارکباد دیتا ہوں۔ یہ ایک اچھی شروعات ہے۔"
اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں اعلان کیا کہ اس نے آج منگل کو علی الصبح غزہ کی پٹی میں فوجی آپریشن "شیلڈ اینڈ ایرو" شروع کیا ہے۔ غزہ کی پٹی کی وزارت صحت کی طرف سے تصدیق کی گئی اسرائیلی حملے میں ’’تحریک اسلامی جہاد‘‘ کے مقامات کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ اس آپریشن میں 3 کمانڈروں، 3 بچوں اور 3 خواتین سمیت 13 افراد جاں بحق اور 20 زخمی ہوگئے ہیں۔
اسرائیلی آرمی ریڈیو نے اطلاع دی کہ اسرائیل نے مصر کو غزہ کی پٹی میں فوجی آپریشن شروع کرنے کی اطلاع دی ہے۔ آرمی ریڈیو نے تصدیق کی کہ یہ پیغام غزہ پر پہلے فضائی حملے کے چند منٹ بعد مصر پہنچا۔

عالمی قوانین کی صریح خلاف ورزی: مصر

مصر کی وزارت خارجہ نے غزہ پر اسرائیلی حملے کی شدید مذمت کردی ہے۔ مصری وزارت خارجہ کے جاری بیان میں کہا گیا کہ ایسے حملے بین الاقوامی قوانین کی کھلی خلاف ورزی ہے۔ ایسے حملوں سے معاملہ مزید خراب ہو جائے گا اور صورتحال قابو سے باہر ہوجائے گی۔
بیان میں مصر کی جانب سے ایسے حملوں کو مکمل طور پر مسترد کرنے کی توثیق کی گئی ہے جو بین الاقوامی قانون کے قواعد اور بین الاقوامی قانونی جواز کی دفعات سے متصادم ہیں
بیان میں کہا گیا یہ حملہ شرم الشیخ کے دو اجلاسوں میں طے پانے والے مفاہمت کے فریم ورک کے اندر کشیدگی کو کم کرنے اور امن عمل کی راہ پر گامزن ہونے کے لیے مناسب ماحول پیدا کرنے کی راہ میں بھی رکاوٹ ہے۔

تنازع بڑھ جائے گا: فلسطینی وزارت خارجہ

فلسطینی وزارت خارجہ نے خبردار کیا ہے کہ غزہ پر اسرائیلی حملوں سے تنازع بڑھ جائے گا اور پورا معاملہ ہی خراب ہوجانے کا خطرہ ہے۔

فلسطینی نیوز اینڈ انفارمیشن ایجنسی نے وزارت خارجہ کے حوالے سے کہا کہ یہ جرم ہمارے لوگوں اور ان کے جائز قومی حقوق کے خلاف اسرائیل کی کھلی جنگ کی توسیع ہے۔

فلسطینی وزارت خارجہ نے کہا اس "جارحیت" کے نتائج کی مکمل ذمہ داری اسرائیل پر عائد ہوگی۔

بدلہ لیا جائے گا: اسلامی جہاد

’’اسلامی جہاد‘‘ نے اپنے ایک بیان میں اسرائیلی حملوں کا بدلہ لینے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔ دریں اثنا اس آپریشن کے دوران غزہ پر مزید حملوں کا امکان بھی ظاہر کیا جا رہا ہے۔

عالمی برادری ذمہ داری ادا کرے: عرب پارلیمنٹ

عرب پارلیمنٹ نے اسرائیلی جارحیت کی مذمت کرتے ہوئے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنی ذمہ داری ادا کرے اور نہتے فلسطینی عوام کے خلاف مسلسل حملوں کو روکنے کے لیے کام کرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں