اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کی طبیعت ناساز، اسپتال میں طبی معائنہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو کی ہفتے کے روز طبیعت اچانک ناساز ہوگئی ہے۔انھیں اسپتال میں منتقل کیا گیا ہے جہاں ان کا طبی معائنہ کیا جا رہا تھا لیکن ان کی حالت اچھی ہے اور مقامی میڈیا کو اقتدار کی منتقلی کی کوئی وجہ نظر نہیں آ رہی ہے۔

اسرائیل کے چینل 12 ٹی وی نے وزیر اعظم کے ڈاکٹر کے حوالے سے بتایا کہ 73 سالہ نیتن یاہو تل حشمر کے شیبا اسپتال میں جاتے ہوئے مکمل طور پر ہوش میں تھے اور انھیں ایمرجنسی کمرے میں لے جایا گیا۔

چینل 12 نے بتایا کہ انھیں بے ہوشی کے عمل سے نہیں گزارہ گیا اور انھیں معذور قرار دینے کے لیے کوئی طریق کار جاری نہیں تھا۔

تل حشمر ساحلی قیساریہ کے قریب واقع ہے جہاں نیتن یاہو کی ایک ذاتی رہائش گاہ ہے۔ اسرائیلی میڈیا کا کہنا ہے کہ وہ ناسازیِ طبع کے وقت وہیں قیام پذیر تھے۔

ان کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک مختصر بیان میں اس بات کی تصدیق کی گئی ہے کہ وہ شیبا میں ہیں،ان کی حالت اچھی ہے اور ان کا طبی معائنہ کیا جا رہا ہے۔

نیتن یاہو گذشتہ سال اکتوبر کے اوائل میں بھی یوم کپور کے موقع پر یہود کے روزے کے دوران بیمار پڑ گئے تھے اور انھیں کچھ دیر کے لیے اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔ اسرائیل اس اختتام ہفتہ پر شدید گرمی کی لپیٹ میں ہے۔

اسرائیل میں طویل عرصے سے بہ طور وزیراعظم برسراقتدار نیتن یاہوعدلیہ میں اصلاحات کے اپنے منصوبے پر بھی سیاسی طوفان کی زد میں ہیں۔اسرائیلی شہری عدالتوں کی مستقبل کی آزادی کے بارے میں اپنے تحفظات پر ان کی حکومت کے خلاف غیر معمولی احتجاج کررہے ہیں۔

اس کے علاوہ امریکی انتظامیہ کے ساتھ ان کی مذہبی قوم پرست اتحادی حکومت کے فلسطینیوں کے خلاف سخت گیر رویہ اختیار کرنے پر بھی تناؤ میں اضافہ ہوا ہے۔نیتن یاہو پر بدعنوانی کے تین مقدمات بھی چل رہے ہیں جبکہ وہ کسی غلط روی سے انکاری ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں