10 سال بعد نیویارک میں "خواتین کے قصاب" کو گرفتار کرلیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی حکام نے خواتین کے قتل کے سلسلے میں ملوث ایک قاتل کو گرفتار کیا ہے۔ دس سال قبل ملزم مبینہ طور پر خواتین کو قتل کرنے کے بعد ان کی لاشوں کو نیویارک شہر کے گلگو بیچ پر ٹھکانے لگا دیا تھا، تاہم پولیس کو اس واقعے کا پتا لگانے میں کئی سال لگ گئے تھے۔

ایک ویڈیو کلپ میں وہ لمحہ دکھایا گیا تھا جب جمعرات کو "خواتین کے قصاب" کے لقب سے مشہور ملزم کو گرفتار کیا گیا تھا۔ جب وہ نیویارک میں گھوم رہا تھا جہاں پولیس نے اسے دھرلیا۔

یہ پیش رفت اس وقت سامنے آئی جب مارچ 2022ء میں ایک نئی سکیورٹی تفتیش نے ملزم کی شناخت ایک مشتبہ کے ملزم کے طور پر کی۔ تفتیش کاروں نے اسے ایک پک اپ ٹرک سے باندھا۔ ایک گواہ نے بتایا کہ اس نے 2010ءمیں اس شخص کو دیکھا تھا۔

ریکس اے ہارمن پر 2010 اور 2011 کے درمیان لانگ آئی لینڈ پر 11 انسانی باقیات میں سے تین خواتین کو قتل کرنے کا الزام ہے۔ اس کے علاوہ اس پر 2007 میں ایک اور خاتون کو قتل کرنے کا بھی الزام ہے۔

متاثرہ افراد میں سے ایک کے بالوں سے ملنے والا ڈی این اے ملزم کے کھائے گئے بچ جانے والے پیزا سے ملا تھا اور حکام نے 2022 سے ملزم کی نقل و حرکت کا پتہ لگانا شروع کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں