سعودی عرب کا ’الیکٹرانک میڈیسن ڈسپنسنگ ڈیوائس‘ کا دنیا میں پہلا تجربہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب نے الیکٹرانک میڈیسن ڈسپنسنگ کے میدان میں ایک انقلابی پیش رفت کرتے ہوئے ایک ایسی مشین تیار کی ہے جس کی مدد سے مریضوں کو انسانی مداخلت کے بغیر ادویات کی فراہمی ممکن بنائی جا سکے گی۔

تبوک میں کنگ سلمان آرمڈ فورسز ہسپتال نے ایک ایسا تجربہ شروع کرنے میں ایک قابل ذکر کامیابی ریکارڈ کی جو کہ دنیا میں اپنی نوعیت کا پہلا تجربہ ہے۔ اس الیکٹرانک ڈیوائس کی مدد سے ہسپتال کے بغیر خود کارطریقے سے الیکٹرانک طریقے سےمریضوں کو ادویات کی فراہمی ممکن ہوگی۔

ادویات کے لیے خودکار ٹیلر مشین
ادویات کے لیے خودکار ٹیلر مشین

اس کامیابی کو ٹیکنالوجی کے شعبے میں سعودی ایجادات کے سلسلے میں وزارت دفاع کی صحت کی خدمات میں شامل کیا گیا ہے۔ یہ آلہ ایک ورک سٹیشن پر مشتمل ہے جو نسخے کے بارکوڈ کو ہینڈل کرتا ہے۔ اس کے علاوہ خصوصی (روبوٹ) آپریٹنگ سسٹم،ایک پیغام رسانی پلیٹ فارم جو نسخے کے مطابق ادویات کی تیاری کو یقینی بناتا ہے۔ خدمت کرتا ہے یہ آلہ مستفید افراد کو چوبیس گھنٹے 102-700 نسخوں کی ذخیرہ کرنے کی گنجائش فراہم کرتا ہے۔

کنگ سلمان ہسپتال میں فارمیسی ڈیپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر میجر علیان العطوی نے کہا کہ یہ آلہ جو کہ دنیا میں اپنی نوعیت کی پہلی مشین ہے جو نسخے کے ساتھ منسلک بارکوڈ کو اسکین کرکے مطلوبہ ڈیٹا کو بھر کر فارماسسٹ کے ذریعے تصدیق کرنے سے پہلے گھر کے قریب ترین ڈسپنسنگ ڈیوائس کا انتخاب کرکے سروس کی درخواست کا کام کرتا ہے۔

ادویات وصول کی جارہی ہیں
ادویات وصول کی جارہی ہیں

اگر نسخہ قبول کر لیا جاتا ہے اور کوئی نوٹ نہیں ہے توصارف کو ایک خصوصی کوڈ اور مشین کے جغرافیائی محل وقوع کے ساتھ ایک پیغام بھیجا جائے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ سروس اور دیگر صحت کی خدمات مملکت کی دانشمند قیادت کی شہریوں کو بہترین اور جدترین طبی سہولیات کی فراہمی کے عزم کی عکاسی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں