بیروت کے باشندوں کو غزہ جیسے حشر کا سامنا کرنا پڑ سکتا: اسرائیل کی دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنان کی جنوبی سرحد پر اسرائیلی فوج اور حزب اللہ کے درمیان کشیدگی اس وقت سے جاری ہے جب سے تحریک حماس نے 7 اکتوبر کو اسرائیل پر غیر معمولی حملہ کیا تھا۔

اس تناظر میں اسرائیلی وزیر دفاع گیلانٹ نے ہفتہ کو لبنان کے ساتھ سرحد کے دورے کے دوران کہا کہ حزب اللہ کو "سنگین غلطی" کے ارتکاب کے خلاف خبردار کرتے ہیں۔ حزب اللہ لبنان کو ایک ایسی جنگ کی طرف گھسیٹ رہی ہے جس کی قیمت لبنانی شہریوں کو ادا کرنا پڑ سکتی ہے۔

گیلانٹ نے دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ بیروت کے باشندوں کا انجام غزہ کے باشندوں کی طرح ہوسکتا ہے۔ حزب اللہ کی جارحیت اب محض اشتعال انگیزی نہیں ہے۔ ہماری بڑی فضائیہ کا رخ شمال کی طرف ہے اور ہم نے غزہ میں اسے صرف 10 فیصد استعمال کیا ہے۔

لبنانی سرزمین پر پہلا حملہ

واضح رہے کہ اس سے قبل ہفتہ کے روز ہی ایک اسرائیلی حملے نے جنوبی لبنان میں سرحد کے 45 کلومیٹر کے فاصلے پر موجود گاڑی کو نشانہ بنایا تھا۔ سات اکتوبر کو غزہ میں شروع ہونے والی لڑائی کے بعد اسرائیل نے پہلی مرتبہ کسی لبنانی علاقے میں اس قدر اندر موجود کسی ہدف کو نشانہ بنایا ہے۔

ایجنسی نے اطلاع دی ہے کہ دشمن کے ڈرون نے لبنان کے ساحل پر زہرانی کے علاقے البراق کے باغات میں سے ایک میں ایک پک اپ ٹرک کو نشانہ بنایا۔ دوسری طرف حزب اللہ نے اعلان کیا کہ اس نے اسرائیلی فوجیوں پر سرحد پار سے دو حملے کیے ہیں جس میں ان کی صفوں میں ہلاکتوں کی اطلاع ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں