فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ جنگ: اسرائیل کا سرنگ نیٹ ورک کے اندر یحییٰ السنوار کے ٹھکانے کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی ریڈیو نے دعوی کیا ہے کہ السنوار ممکنہ طور پر غزہ کی پٹی کے اندر اسرائیلی یرغمالیوں کے ساتھ رفح یا دیر البلح میں ہیں۔

اسرائیلی ریڈیو نے آج جمعرات کو غزہ کی پٹی میں حماس کے سیاسی بیورو کے سربراہ یحییٰ السنوار کے ٹھکانے کا انکشاف کیا۔

ریڈیو نے دعوی کی کہ اسرائیلی فوج نے سرنگوں کے اندر جنگ کے آخری دور میں جو انکشاف کیا تھا، اس کے تحت السنوار خان یونس شہر میں تھے۔ پھر وہ غزہ کی پٹی کے اندر اسرائیلی قیدیوں کے ساتھ رفح یا دیر البلح چلے گئے۔

گڈشتہ اتوار کو اسرائیلی ریڈیو نے کہا کہ سنوار نے اس جنگ کے لیے 15 سال سے تیاری کر رہے تھے اور وہ ا ایک پیچیدہ سرنگ کے نیٹ ورک میں کاروائی کے لیے جانے جاتے ہیں۔

ریڈیو کےمطابق اسرائیلی فوج غزہ کی پٹی میں زیر زمین وسیع فاصلے تک گھس گئی ہے۔ یہ کئی کلومیٹر تک پھیلی ہوئی سرنگوں کا نیٹ ورک ہے۔

گڈشتہ ہفتے یورپی یونین نے السنوار کو دہشت گردوں کی فہرست میں شامل کیا، جس کے مطابق یورپی یونین کے رکن ممالک میں ان کی رقم اور دیگر مالیاتی اثاثے منجمد کر دیے جائیں۔

حماس نے 7 اکتوبر کو غزہ کی پٹی سے ملحق اسرائیلی بستیوں پر آپریشن الاقصیٰ طوفان شروع کیا، جس کے نتیجے میں تقریباً 1,200 اسرائیلی ہلاک ہوئے، اس کے علاوہ تقریباً 250 دیگر کو یرغمال بنا لیا گیا، جن میں سے کچھ کو بعد میں رہا کیا گیا تھا۔

چھڑپوں کے بعد ایک جنگ بندی ہوئی جو 7 دن تک جاری رہی اور یہ مصری، قطری اور امریکی ثالثی کے ذریعے طے پائی، اس دوران خواتین اور بچوں کے قیدیوں کا تبادلہ کیا گیا اور غزہ کی پٹی میں امداد کی رقم لانے پر اتفاق کیا گیا۔

غزہ کی پٹی میں 7 اکتوبر سے اسرائیلی بمباری اور زمینی کارروائیوں کے نتیجے میں 25 ہزار سے زائد افراد ہلاک اور 63 ہزار سے زائد زخمی ہو چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں