حماس کی غزہ میں اسرائیلی فوج کو نشانہ بنانے کی کارروائیوں کا آغاز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

غزہ میں جاری اسرائیلی جنگ کا چوتھا ماہ مکمل ہونے سے پہلے حماس نے غزہ میں اپنی عسکری طاقت کو بحال رکھنے کی علامات ظاہر کرتے ہوئے بروئے کارلانا شروع کر دیا ہے۔

حالیہ چند دنوں میں غزہ کے بعض مقامات پر اپنی پولیس کی نفری کی تعیناتی اور حماس حکومت کے ملازمین کو تنخواہوں کی از سر نو ادائیگی شروع کرنے کے علاوہ اتوار کے روز سے اسرائیلی فوجیوں کو بھی حملوں کے لیے چن اور تلاش کر کے نشانہ بنانے کی کوشش شروع کردی ہے۔

اس سے قبل سات اکتوبر کے حماس حملے کے بعد اسرائیل نے کئی ہفتے بعد جب بمباری کے ساتھ ساتھ جب اپنی فوج زمین پر اتاری تو شمالی غزہ میں حماس نے کافی جم کر مقابلہ کیا ۔

حماس کی یہ دفاعی جنگ بعد ازاں خان یونس اور جنوبی غزہ میں بھی جاری ہے۔ لیکن اتوار کے روز یہ اطلاعات سامنے آئی ہیں کہ حماس نے نسبتاً جارحانہ انداز میں اسرائیلی فوجیوں کو غزہ میں تاک تاک کر نشانہ بنانے کی کوششیں شروع کر دی ہیں۔

یہ پچھلے چند دنوں میں غزہ کے زمینی حالات کی تبدیلی اور حماس کے حق میں ایک اہم پیش رفت سمجھی جارہی ہیں۔ اسرائیلی فوج نے پچھلے ہفتے کہنا تھا کہ اب اس کا فوکس اب خان یونس پر ہے۔

تاہم اسرائیلی فوج نے خان یونس سے اگے رفح کی طرف بھی بمباری تیز کر دی ہے۔ پچھلے چوبیس گھنتوں کے دوران رفح میں اسرائیلی بمباری سے بے گھر فلسطینیوں کی کثیر تعداد ہلاک اور زخمی ہوئی ہے۔

رفح کی طرف اسرائیلی بمباری میں تیزی سے مصر کو بھی تشویش پیدا ہوئی ہے کہ اسرائیلی فوج رفح میں بمباری کر کے بے گھر فلسطینیوں کو رفح سے آگے مصری علاقے میں دھکیلنے کی کوشش کر رہی ہے۔ مصر شروع سے غزہ کے ان بے گھر فلسطینیوں کی مصر میں نقل مکانی کو مسترد کر رہا ہے۔

ادھر اسرائیلی فوج نے کہا ہے کہ اس نے شمالی غزہ میں ساتھ حماس جنگجووں کو ہلاک کیا ہے اور اسلحے کے ایک ذخیرے پر بھی قبضہ کیا ہے۔ اسرائیلی فوج کے ریڈیو کے مطابق فوج نے حماس کے دو بنکروں میں بھی داخل ہونے کی کوشش کی ہے۔ تام جنگجووں نے مزاحمت کی ہے۔

ایک مقامی شہری نے بتایا ہے کہ غزہ شہر کی صفائی کا کام شروع کر دیا گیا ہے تاہم اسرائیلی فوج کا شمالی غزہ سے انخلاء ایک جنگی چال تھی۔ افدھر خان یونس میں اسرائیلی فوج کی لڑائی کے دوران طبی عملے کو بھی نشانہ بنایا گیا ہے۔ اور حماس کے لوگ خان یونس کی گلیوں کے اندر بھی مقابلہ کر رہے ہیں۔

ایک اطلاع کے مطابق اسرائیلی فوج نے حماس کے ایک لیڈر کے گھر کو محاصرے میں لے لیا ہے۔ فوج کے ترجمان کے مطابق اس جگہ بھی حماس کے جنگجووں نے مزاحمت کی مگر کئی ایک کو فوج نے ہلاک کر دیا ہے۔

واضح رہے خان یونس میں حماس کے خاتمے کا اسرائیلی فوج ایک ہفتہ پہلے اعلان کرچکی ہے۔ تاہم ایک اسرائیلی فوجی افسر کا کہنا ہے کہ خان یونس میں حماس کی چار بٹالینز تھیں جن میں سے ایک ابھی باقی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں