العربیہ ایکسکلوسیو

عراق کے زیر حراست ابو بکر البغدادی کے بچوں کی تصاویر پہلی مرتبہ منظر عام پر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

داعش کے سابق سربراہ ابوبکر البغدادی کی اہلیہ اسماء محمد نے العربیہ کو اپنے خصوصی انٹرویو میں ابو بکر البغدادی کے کئی راز پہلی مرتبہ افشا کر دئیے۔ ابو بکر البغدادی کو پانچ سال قبل قتل کر دیا گیا تھا۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ نے پہلی مرتبہ البغدادی کے بچوں کی تصاویر بھی حاصل کر لیں۔

چار خواتین سے شادی کرنے والے البغدادی کے بچوں کی تعداد 11 ہے جن میں سے دو کو حراست میں لیا گیا ہے۔ اس کے کچھ بچے عراق میں قید ہیں۔ عراقی جیلوں میں موجود بچوں میں عمائمہ، فاطمہ، حسن اور عبداللہ شامل ہیں۔

البغدادی کے بیٹے یمن کی تصویر بھی العربیہ سامنے لایا ہے۔ یمن شام میں اپنے والد کے ساتھ اس وقت مارا گیا تھا جب اس نے پانچ سال قبل اپنی دو بیویوں کے ساتھ خود کو دھماکے سے اڑا لیا تھا۔

یمان جس نے خود البغدادی کے ساتھ شام میں اڑا لیا تھا
یمان جس نے خود البغدادی کے ساتھ شام میں اڑا لیا تھا

1999 میں البغدادی کے نام سے مشہور ابراہیم عواد سے شادی کرنے والی اسماء نے اپنے انٹرویو میں انکشاف کیا کہ ان کے شوہر کو امریکی فورسز نے 2004 میں بغیر کسی وجہ کے گرفتار کیا تھا۔ اسماء نے بتایا کہ جیل سے رہائی کے دو سال بعد اس کے خیالات بالکل بدل گئے۔ اسماء نے نشاندہی کی کہ البغدادی کے ساتھ اس کی زندگی 2008 سے غیر مستحکم تھی۔ اسماء نے انکشاف کیا کہ داعش کی قیادت سنبھالنے کے بعد البغدادی متکبر ہوگیا تھا اور امریکی ڈرونز سے بہت خوفزدہ رہتا تھا۔

عبد الله ابن البغدادی ۔ زیر حراست

عراقی عدالتی حکام نے جمعرات کو باضابطہ اعلان کیا کہ وہ ابوبکر البغدادی کے خاندان کو بازیاب کرانے میں کامیاب ہو گئے ہیں۔ سپریم جوڈیشل کونسل کے میڈیا سنٹر نے کہا کہ البغدادی کے اہل خانہ کے بیانات پہلی کرخ تحقیقاتی عدالت میں مجاز جج کی براہ راست نگرانی میں ریکارڈ کیے گئے۔ داعش کے اہم ترین رازوں سے پردہ اٹھانے کے لیے اس کے اہل خانہ سے تحقیقات جاری ہیں۔

أميمة ابنة البغدادی (عراقی جیل میں قید)

واضح رہے کہ تنظیم داعش کے سربراہ نے 2014 میں عراق اور شام میں بڑے علاقوں پر کنٹرول حاصل کرکے اس وقت اپنی مبینہ "خلافت" کا اعلان کر دیا تھا۔ اکتوبر 2019 میں شمال مغربی شام کے علاقے ادلب میں امریکہ کی جانب سے ایک خصوصی آپریشن کے بعد وہ مارا گیا تھا۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اس وقت اعلان کیا تھا کہ امریکی افواج کی ایک خصوصی ٹیم نے البغدادی کی نگرانی کی اور اس کا تعاقب کیا لیکن اس نے اپنی دو بیویوں اور بیٹے کے ساتھ خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں