غزہ جنگ پر برازیلی صدر کے بیان پر اسرائیل کا اظہار برہمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیل کے وزیر خارجہ نے برازیلی صدر لولا ڈی سلوا کی جانب سے غزہ پر اسرائیلی جنگ کو دوسری جنگ عظیم میں نازیوں کے مظالم سے تشبیہ دینے پر احتجاج کیا۔

وزارت خارجہ کے مطابق اسرائیل کاٹز نے برازیل کے سفیر کو پیغام دیا کہ "ہم نہ بھولیں گے نہ معاف کریں گے۔ یہ بہت سنجیدہ سام دشمن حملہ ہے۔ میں اپنے اور اسرائیل کے شہریوں کی جانب سے کہہ رہا ہوں کہ صدر لولا کو بتا دیں کہ جب تک وہ اپنا بیان واپس نہیں لیں گے تب تک وہ اسرائیل کے لیے ناپسندیدہ شخصیت [persona non grata] رہیں گے۔"

اسرائیل نے لولا ڈی سلوا کے بیان کو ہالوکاسٹ اور یہودیوں کی تذلیل قرار دیتے ہوئے برازیل کے سفیر کو دفتر خارجہ طلب کیا تھا۔

یاد رہے کہ برازیل کے صدر لولا ڈی سلوا نے اتوار کے روز غزہ میں اسرائیلی فوج ہاتھوں فلسطینیوں کے اس اندھا دھند قتل عام کو نسل کشی کا نام دیا ہے۔ اس نسل کشی کے مرتکب اسرائیل کو ہٹلر کا کردار ادا کرنے والا قرار دیا ہے، جس نے یہودیوں کی نسل کشی کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں