فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ پراسرائیلی فوج کاحجم اور طاقت کا اندھا استعمال ناقابل قبول ہے:ڈاکٹرزودآؤٹ بارڈرز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ میں حماس اور اسرائیل کے درمیان جاری لڑائیوں کی شدت کے درمیان اسرائیل غزہ کی پٹی پر بے لگام بمباری جاری رکھے ہوئے ہے، خاص طور پر جنوب میں گنجان آباد شہر رفح پر شدید بمباری کی جا رہی ہے۔

"غزہ میں اسرائیلی فوج کا حجم غیر معقول"

اسرائیلی فوج نے گذشتہ چند گھنٹوں کے دوران حملوں کو تیز کر دیا ہے اور ان کی شدت میں اضافہ کیا ہے۔ ڈاکٹرز ودآؤٹ بارڈرز نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ بے گھر لوگوں سے بھرے علاقوں میں اسرائیلی فوج کا استعمال "ناقابل قبول" ہے۔

تنظیم نے کہا کہ اسرائیل کی طرف سے استعمال ہونے والی طاقت کی مقدار ناقابل برداشت ہے خاص طور پر ان علاقوں میں جہاں اس نے لوگوں کو جمع ہونے کی اپیل کی تھی۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ حالیہ دنوں میں اسرائیلی فوج کے ہاتھوں فلسطینیوں کی ہلاکتیں محفوظ علاقوں کے بارے میں وعدوں کی عدم سنجیدگی کی تصدیق کرتی ہیں اور یہ ثابت کرتی ہیں کہ غزہ کی پٹی میں کوئی محفوظ جگہ نہیں ہے۔

ایک بیان میں تنظیم نے اپنے ملازمین اور ان کے اہل خانہ کو نشانہ بنانے کی مذمت کی۔

یہ بیان اس وقت سامنے آیا جب غزہ کی پٹی پر اسرائیلی جنگ اپنے پانچویں مہینے کے قریب پہنچ گئی ہے۔ فلسطینی شہریوں میں روزانہ کی بنیاد پر ہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے۔

غزہ شہر کے جنوب مشرق میں بدھ کے روز شدید جھڑپیں ہوئیں۔ عینی شاہدین نے اطلاع دی ہے کہ یہ مسلح فلسطینیوں اور اسرائیلی فوج کے درمیان شہر کے جنوب مشرق میں الزیتون محلے میں ہوئیں۔

دریں اثنا اسرائیلی فوج نے شجاعیہ کے محلے میں الزیتون اور الترکمان علاقوں کے مکینوں سے غزہ کی پٹی کے جنوب میں المواسی علاقے کی طرف نقل مکانی کے لیے کہا ہے مگر شہری خوف کا شکار ہیں اور وہ نقل مکانی نہیں کرسکےہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں