’چالاک نیتن یاھونے ایران کی وجہ سے امریکہ کو رفح پر حملے کی حمایت پر قائل کر لیا‘

امریکہ نےاسرائیل کی ایران کےخلاف وسیع جنگ کے بجائے رفح پر چڑھائی کی حمایت کی ہے:امریکی میڈیا، فلسطین کا تشویش کا اظہار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

ایک ایسے وقت میں جب پوری دنیا کی توجہ اسرائیل پر ایرانی حملے کے بعد تل ابیب کے جوابی حملے کے امکانات پر مبذول ہے اسرائیلی میڈیا مین رفح حملے کے لیے امریکی حمایت کی خبریں گردش کررہی ہیں۔ امریکی میڈیا کے مطابق واشنگٹن نے اسرائیل کو ایران کے خلاف محدود کارروائی کی شرط پر رفح میں فوج داخل کرنے کی حمایت کا عندیہ دیا ہے۔

امریکی میڈیا میں آنے والی اطلاعات کے بعد فلسطینی ایوان صدر نے اس پر سخت ردعمل ظاہر کیا ہے۔

فلسطینی ایوان صدر کے ترجمان نے ’عرب ورلڈ نیوز ایجنسی‘ کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ امریکہ کی جانب سے ایران کے خلاف جامع جنگ شروع نہ کرنے کے بدلے میں اسرائیل کو رفح میں داخل ہونے کی اجازت دینے کے بارے میں بات کرنا "خطرناک" ہے، اور ہم واشنگٹن سے اس کی وضاحت کرنے کا مطالبہ کریں گے۔

اخبار "اسرائیل ہیوم" نے تین اسرائیلی ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے خبر دی ہے کہ امریکی انتظامیہ نے رفح پر حملہ کرنے کے اسرائیلی فوج کے منصوبے کی منظوری اس شرط پر ظاہر کی ہے کہ اسرائیل ایران کے اندر بڑے پیمانے پر حملہ نہیں کرے گا۔ .

انہوں نے نشاندہی کی کہ رفح کے حوالے سے جو اسرائیلی منصوبہ امریکی انتظامیہ کو پیش کیا گیا تھا اس میں جنوبی غزہ کی پٹی میں واقع شہر سے شہری آبادی کو نکالنے کے طریقے شامل تھے۔

"حملہ ہونے ہی والا ہے"

ذرائع نے مزید کہا کہ اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو "اپنی سیاسی چال میں کامیاب ہوگئے اور انہوں نے رفح شہر پر منصوبہ بند حملے کے حوالے سے امریکی سہولیات حاصل کرنے کے لیے ایرانی حملے کا فائدہ اٹھایا ہے"۔

انہوں نے وضاحت کی کہ رفح آپریشن کے قریب ہونے کے دیگر اشارے بھی ملے ہیں۔ اسرائیلی فوج نے توپ خانے کے یونٹس اور بکتر بند دستوں کو دوبارہ غزہ کی پٹی میں منتقل کر دیا ہے، جس کو رفح میں جنگی کارروائیوں کی تیاری سے تعبیر کیا جا سکتا ہے۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ حالیہ عرصے میں اسرائیلی وزارت دفاع نے 40,000 خیموں کی خریداری کا اعلان کیا ہے، جو رفح سے شمالی اور وسطی غزہ کی پٹی کے علاقوں میں جانے والے شہریوں کے لیے مختص کیے جائیں گے۔

تینوں اسرائیلی ذرائع نے اخبار کو بتایا کہ اسرائیل نے آخری لمحات میں کم از کم دو بار ایران کے خلاف اپنا ردعمل منسوخ کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ مصری ذرائع نے عرب میڈیا کو اس بات کی تصدیق کی ہے کہ مصری فوج نے رفح کے ساتھ سرحد کے ساتھ شمالی سینا میں الرٹ جاری کر دیا ہے تاکہ رفح شہر پر اسرائیلی حملے کے اثرات کا مقابلہ کیا جا سکے۔

حملے کا اسرائیلی منصوبہ

انہوں نے کہا کہ امریکی صدر جو بائیڈن کی جانب سے شہر پر زمینی حملے کے اسرائیلی منصوبے کی منظوری کے بعد اسرائیلی فوج مکینوں کو انخلاء کے لیے پرچے گرا کر کارروائیوں کا اندازہ لگائے گی۔

انہوں نے وضاحت کی کہ پہلے مرحلے میں کتابچے کی ترسیل کا مشاہدہ کیا جائے گا جو رفح میں غزہ کے باشندوں کو مطلع کرے گا کہ انہیں انخلاء کے لیے تیاری کرنی چاہیے، جب کہ دوسرے مرحلے میں ان علاقوں کی نشاندہی کرنا شامل ہے جہاں آبادی منتقل ہو گی۔

اس نے عندیہ دیا کہ رفح کے رہائشیوں کا ایک حصہ خان یونس منتقل ہو جائے گا اور ان میں سے کچھ کو ساحلی پٹی پر منتقل کر دیا جائے گا۔اس کے بعد زمینی کارروائیاں شروع ہو جائیں گی، جس میں دو یا تین ہفتے لگیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں