فلسطین اسرائیل تنازع

رفح میں مزید اسرائیلی فوج بھیجی جائے گی : یوو گیلنٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل نے اس امکان کو رد نہیں کیا ہے کہ آنے والے دنوں میں غزہ کے انتہائی جنوب میں واقع رفح شہر کے لیے زمینی فوج کی مزید نفری بھیجی جائے گی۔ تاہم یہ اس صورت کیا جائے گا جب رفح میں جنگی شدت یا مزاحمت کی سطح اونچی ہوگی۔

اس امر کا اظہار اسرائیلی وزیر دفاع یووگیلنٹ نے جمعرات کے روز کیا ہے۔ اسرائیلی فوج جو اب تک رفح سے کم از کم ساڑھے چار لاکھ فلسطینی بے گھروں کو ایک بار پھر نقل مکانی پر مجبور کر چکی ہے۔ رفح میں آپریشن شروع ہونے کے دوران مزید اطیمنان میں آگئی ہے کہ امریکہ نے اسی ہفتے میں ایک ارب ڈالر کی مزید فوجی امداد اور اسلحہ اسرائیل کو دینے کا پراسس شروع کر دیا ہے۔

اسرائیلی فوج جسے رفح میں داخل ہوئے دوسرا ہفتہ مکمل ہونے کو ہے کے بارے میں اسرائیلی وزیر دفاع کا کہنا ہے کہ وہ حماس کے عسکری ونگ کے سینکڑوں ٹھکانوں کو پہلے ہی ختم کر چکی تھی۔ جبکہ زمینی فوج اور ٹینکوں کی مدد سے اب رفح میں زیرزمین سرنگوں کے نیٹ ورک کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔ اب تک رفح میں کئی سرنگیں تباہ کر دی گئی ہیں۔

تاہم یوو گیلنٹ نے یہ بھی کہا ہے کہ مزید اسرائیلی فوجی رفح میں بھیجے جائیں گے۔ جس سے سرنگوں کو تباہ کرنے کی سرگرمی تیز ہو جائے گی۔ اسرائیلی وزیر دفاع کے مطابق اب تک رفح میں بھیجی گئی زمینی فوج موقع پر موجود رہتے ہوئے حالات اور ضرورت کے مطابق جنگی تدابیر کر رہی ہے۔

واضح رہے امریکہ جس نے اسی ہفتے مزید ایک ارب ڈالر کی فوجی امداد اسرائیل کے نام کی ہے اس نے شروع سے یہی اعتراض کیا ہے کہ اسرائیل بغیر کسی منظم منصوبے کے رفح پر حملہ کرنے جارہا ہے۔ اب اس بارے میں امریکہ نے خاموشی اختیار کرلی ہے ۔

نیز ساڑھے چار لاکھ کی تعداد میں نئی نقل مکانی پر مجبور ہونےوالی آبادی کے حوالے سے بھی خاموشی اختیار کر لی ہے کہ اسرائیلی فوج کے نئے بے گھر کیے گئے فلسطینی کہاں اور کس حال میں ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں