میرانشاہ: سکیورٹی اہلکاروں پر حملہ، آٹھ شہید

فورسز کا سرچ آپریشن، گن شپ ہیلی کاپٹر بھی بروئے کار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان میں وفاق کے زیر انتظام قبائلی علا قہ جات میں جمعرات کی صبح آٹھ سکیورٹی اہلکاروں کے شہید ہونے کے بعد سکیورٹی فورسز نے سرچ آپریشن شروع کر دیا ہے۔ سکیورٹی اہلکاروں کی شہادت کا یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب اہلکاروں کا ایک قافلہ میرانشاہ اور غلام خان کے علاقے سے گذر رہا تھا۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق بم سڑک کنارے نصب کیا گیا تھا۔

سکیورٹی کانوائے کو اس دوران دہشت گردوں نے بم دھماکے کا نشانہ بنا یا۔ ذرائع کے مطابق یہ بم دیسی ساختہ تھا۔ اس کاروائی کے فوری بعد زخمی اور شہید ہونے والے سکیورٹی اہلکاروں کو میرانشاہ اور بنوں کے فوجی ہسپتالوں میں منتقل کر دیا گیا ہے۔ زخمیوں کی تعداد دس سے زائد بتائی گئی ہے۔

سکیورٹی اہلکاروں نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور بھاری نفری سے سکیورٹی فورسز نے علاقے میں سرچ آپریشن شروع کر دیا ہے۔ اس دوران دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر گن شپ ہیلی کاپٹرز سے شیلنگ کیے جانے کی بھی اطلاعات آ رہی ہیں۔

واضح رہے جب سے طالبان کی طرف سے رضاکارانہ جنگ بندی ختم ہوئی ہے قبائلی علاقہ جات میں دہشت گردوں اور سکیورٹی فورسز کے درمیان اس نوعیت کے واقعات ہو رہے ہیں۔ جبکہ حکومت اور طالبان کے درمیان امن مذاکرات تعطل کا شکار ہیں۔

شہید ہونے والے سکیورٹی اہلکاروں کی لاشیں ان کے آبائی علاقوں میں بھجوانے کی تیاری شروع کر دی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں