.

پاکستانی نژاد امریکی نوجوان طیارہ حادثے میں جاں بحق

والد کے ہمراہ جہاز پر دنيا کا چکر لگانے کی کوشش میں تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اپنے والد کے ہمراہ دنیا کا چکر لگانے والے پاکستانی نژاد امریکی پائلٹ حارث سلیمان کا طیارہ بحرالکاہل میں گر کر تباہ ہو گیا ۔ حارث سلیمان کی لاش مل گئی جبکہ ان کے والد بابر سلیمان کی تلاش جاری ہے۔

سليمان خاندان کی ايک ترجمان نے بتايا کہ طيارہ امريکن سماوا ميں پاگو پاگو کے مقام سے اڑنے کے کچھ ہی دير بعد سمندر ميں گر کر تباہ ہو گيا۔ حادثے کے وقت طيارے ميں سترہ سالہ حارث سليمان اور پاکستان ميں پيدا ہونے والے ان کے والد بابر سليمان موجود تھے۔ امدادی کارکنوں کے مطابق حارث کی لاش تلاش کر لی گئی ہے جبکہ ان کے والد کے ليے ابھی تلاش جاری ہے۔

امريکی فيڈرل ايوی ايشن ايڈمنسٹريشن کے ترجمان اين گريگور کے مطابق ايک انجن والا ہاکر بیچ کرافٹ نامعلوم وجوہات کی بناء پر سمندر ميں گر کر تباہ ہوا۔ فیڈرل ایوی ایشن اتھارٹی کے مطابق طيارے کی دم پر درج نمبر يا ’ٹيل نمبر‘ سے نشاندہی ہوتی ہے کہ سمندر ميں گرنے والا طيارہ امريکی رياست انڈيانا ميں رہنے والے بابر سليمان کا ہی تھا۔

امريکی کوسٹ گارڈز کی ترجمان مليسا مک کينزی نے بتايا کہ عينی شاہدين کے مطابق انہوں نے پاگو پاگو کے بين الاقوامی ہوائی اڈے سے اڑتے ہی قريب 1.61 کلوميٹر کے فاصلے پر ايک طيارے کو کريش ہوتے ہوئے ديکھا۔ طيارہ بحرالکاہل کے وسط ميں واقع امريکی رياست ہوائی کی طرف اڑ رہا تھا۔

حارث سليمان اپنے والد کے ہمراہ تيس دنوں کے اندر اندر دنيا کا چکر لگانے کے مقصد سے نکلے تھے۔ ان کے مقاصد ميں ايک انجن والے طيارے ميں سب سے کم دورانيے ميں دنيا کے گرد چکر لگانا اور ايسا کرنے والا سب سے کم عمر پائلٹ بننا شامل تھے۔ انہوں نے اپنے اس سفر کا آغاز 19 جون کو کيا تھا اور آئندہ اتوار کے روز انہيں اپنے گھر واپس پہنچنا تھا۔

يہ امر اہم ہے کہ اس سفر کے ذريعے حارث سليمان اور ان کے والد پاکستان ميں سیٹزنز فاونڈیشن کے ليے فنڈ اکٹھا کرنے کے خواہشمند تھے۔ يہ غير سرکاری ادارہ پاکستان ميں ايسے اسکول تعمير کرتا ہے، جن ميں کم مالی وسائل سے تعلق رکھنے والے بچے تعليم حاصل کرتے ہيں۔