کراچی:ٹی وی صحافی کو سادہ کپڑوں میں ملبوس پولیس اٹھا لے گئی !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کے سب سے بڑے شہرکراچی میں سادہ لباس میں ملبوس پولیس اہلکار ایک ٹی وی چینل کے صحافی کو بظاہر طاقت کے بل پر ویگو ڈالے میں اٹھا لے گئے ہیں۔صحافیوں کی یونین اورانسانی حقوق کے کارکنوں نے صحافی کو اس طرح اغوا کے انداز میں اٹھا لے جانے کی مذمت کی ہے۔

فوری طورپر یہ واضح نہیں ہوسکا کہ صحافی نفیس نعیم کو کن لوگوں یا کس ادارے کے اہلکاروں نے کیوں اٹھایا ہے۔ وہ آج نیوزٹیلی ویژن چینل میں بہ طوراسائنمنٹ ایڈیٹر کام کرتے ہیں۔

ان کے آجرادارے نے بتایا کہ سادہ لباس میں ملبوس متعدد افراد نے نفیس نعیم کو کراچی کے علاقے ناظم آباد میں ان کے گھر کے قریب پیر کی سہ پہر ایک بازار میں تحویل میں لے لیا ہے۔ان کی اہلیہ کے مطابق وہ بازار میں گھریلوسامان کی خریداری کے لیے گئے تھے۔مبیّنہ اہلکاروں یا افراد نے انھیں پکڑ کر ویگوڈالے میں پٹخ دیا اورپھر تیزی سے گاڑی کو وہاں سے بھگا کر لے گئے ہیں۔یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ نفیس نعیم کو کہاں لے جایا گیا ہے۔

واضح رہے کہ پاکستان کی موجودہ اور سابقہ حکومتیں بالاصرار یہ کہتی چلی آرہی ہیں کہ وہ آزادیِ اظہارکی حمایت کرتی ہے لیکن انسانی حقوق کے گروپ اکثر پاکستان کے سکیورٹی اداروں اور پولیس پرصحافیوں کو ہراساں کرنے اور ان پر حملے کرنے کے الزامات عاید کرتے رہتے ہیں۔

آج نیوز نے ایک بیان میں کہا:’’اگر کسی شخص نے قانون کے خلاف کوئی فعل کیا ہے تواس کے خلاف قانون کے مطابق ہی کارروائی کی جانی چاہیے‘‘۔پولیس نے بتایا کہ وہ واقعہ کی تفتیش کررہی ہے اور اس نے علاقے سے سی سی ٹی وی فوٹیج حاصل کرلی ہے۔

وفاقی وزیرداخلہ رانا ثناءاللہ نے حکام کو نفیس نعیم کا سراغ لگانے اور بازیاب کرانے کا حکم دیا ہے۔ان کی بظاہر گرفتاری کی پاکستان کے صحافیوں کی مرکزی یونین نے مذمت کی ہے اورحکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ صحافی کی گم شدگی کے ذمے داروں کے خلاف کارروائی کرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں