چئیرمین تحریک انصاف کی قیادت میں لاہور سے لانگ مارچ کا آغاز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان تحریک انصاف کے چئیرمین اور سابق وزیر اعظم عمران احمد خان نیازی صوبائی دارالحکومت لاہور سے 'حقیقی آزادی مارچ' کی قیادت کرنے کے لئے لبرٹی چوک پہنچ گئے۔

عمران خان نے لبرٹی چوک پر مارچ کی روانگی سے قبل عوام سے خطاب میں کہا کہ "ہمارا مارچ پر امن ہے اور ہم ہمیشہ سے پر امن رہے ہیں۔ ہم صرف ان علاقوں تک محدود رہیں گے جہاں تک ہمیں اجازت ملی ہے اور ریڈ زون میں جانے کی کوشش نہیں کریں گے۔"

پی ٹی آئی کے پلان کے مطابق پہلے دن لانگ مارچ لاہور میں ہی رہے گا ۔ لبرٹی چوک سے اچھرہ، مزنگ،ایم او کالج، جنرل پوسٹ آفس چوک ،داتا دربارسے آزادی چوک پہنچے گا۔ لانگ مارچ اگلے دن شاہدرہ سے شروع ہوگا۔ دوسرے روز ہفتے کو مریدکے ،کامونکی سے گوجرانوالہ پہنچے گا۔ ڈسکہ سے ہوتا ہوا سیالکوٹ پہنچے گا۔لانگ مارچ سمبڑیال، وزیر آباد سے ہوتا ہوا گجرات پہنچے گا۔ لالہ موسی کھاریاں سے جہلم جائے گا۔ گوجر خان سے راولپنڈی اور چار نومبر جمعے کو راولپنڈی سے اسلام آباد میں داخل ہوگا۔

حکومتی تیاریاں

وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے ایک پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ کسی جتھے کو اسلام آباد پر چڑھائی کی اجازت نہیں دی جائے گی اور بری نیت سے آنے والوں سے سختی سے نمٹا جائے گا ۔ جتھہ کلچر کے فروغ سے ملک تباہ ہو رہا ہے ۔ عمران خان کے لانگ مارچ کے لئے اعلیٰ عدلیہ نے پیرامیٹرز طے کر دیئے ہیں۔"

ان کا مزید کہنا تھا کہ "عمران خان قانون کے مطابق پر امن احتجاج کے لئے اسلام آباد آئے تو وفاقی حکومت عدالت کی جانب سے تفویض کردہ ذمہ داریاں پوری کرے گی، لیکن اگر کسی نے چڑھائی کرنے کی کوشش کی تو آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے گا۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں