پاکستان کے دفتر خارجہ نے ’برکس‘ میں شمولیت سے متعلق افواہوں کی تردید کر دی

غیر ملکی سفارت کاروں کی پاکستانی سیاسی شخصیات سے کئی ملاقاتیں ہوتی ہیں، یہ ایک عام سفارتی عمل ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ترجمان پاکستان دفتر خارجہ ممتاز زہرہ بلوچ نے کہا ہے کہ عالمی سطح پر ابھرتی ہوئی معیشتوں پر مشتمل بلاک ’برکس‘ میں شمولیت کے لیے پاکستان نے تاحال کوئی باضابطہ درخواست نہیں کی۔

ترجمان دفتر خارجہ کے وضاحتی بیان سے محض ایک روز قبل برازیل، روس، بھارت، چین اور جنوبی افریقہ پر مشتمل اس بلاک میں سعودی عرب، ایران، ایتھوپیا، مصر، ارجنٹائن اور متحدہ عرب امارات کو شامل کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

ممتاز زہرہ بلوچ نے ہفتہ وار پریس بریفنگ کے دوران کہا کہ پاکستان تازہ ترین پیش رفت کا جائزہ لے گا اور گروپ کے ساتھ اپنے مستقبل کے تعلقات کے بارے میں فیصلہ کرے گا۔

بلاک کی توسیع کے دوران پاکستان کو نظر انداز کیے جانے سے متعلق سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ جوہانسبرگ میں اس پیش رفت سے پاکستان باخبر ہے۔.

انہوں نے کہا کہ پاکستان تکثریت پسندی کا بھرپور حامی ہے اور مختلف کثیر الجہتی تنظیموں کے رکن کے طور پر اس نے عالمی امن اور ترقی کے لیے ہمیشہ اہم کردار ادا کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان عالمی تعاون اور شمولیتی تکثریت پسندی کے فروغ کےجذبے کو پروان چڑھانے کے لیے کوششیں جاری رکھے ہوئے ہے۔

پریس بریفنگ کے دوران ترجمان دفتر خارجہ سے امریکی سفیر اور چیف الیکشن کمشنر کے درمیان ہونے والی ملاقات اور آسٹریلوی ہائی کمشنر کی جانب سے دیے گئے ناشتے کے بارے میں بھی سوال کیا گیا جس میں سابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سمیت پی ٹی آئی کے رہنماؤں کو بھی مدعو کیا گیا تھا۔

جواب میں انہوں نے کہا کہ ہم نے دیکھا ہے کہ غیر ملکی سفارت کاروں کی پاکستانی سیاسی شخصیات سے کئی ملاقاتیں ہوتی ہیں، یہ ایک عام سفارتی عمل ہے کہ ہر ملک کے سفارت کار اُس ملک کے سیاسی رہنماؤں سے ملاقاتیں کرتے ہیں جہاں وہ تعینات ہوتے ہیں۔

امریکی سفیر اور چیف الیکشن کمشنر کے درمیان ہونے والی ملاقات کے بارے میں ممتاز زہرہ بلوچ نے کہا کہ وہ صرف اس بات کی تصدیق کر سکتی ہیں کہ ملاقات ہوئی تھی، ان کا کہنا تھا کہ میں آپ کو مشورہ دوں گی کہ ملاقات کی تفصیلات اور یہ جاننے کے لیے امریکی سفارت خانے یا الیکشن کمیشن سے رابطہ کریں کہ یہ ملاقات پاکستان میں جمہوریت کے فروغ اور آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کے انعقاد کے لیے کیا کردار ادا کرے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں