.

حلب کے درزی نے کینیڈیئن دلہن کو شرمندگی سے بچا لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کینیڈا کے صوبے اونٹاریو میں شامی درزی ایک مقامی دلہن کو سخت تنگی اور پشیمانی کی حالت سے نکالنے کا ذریعہ بن گیا۔

قصہ کچھ اس طرح ہے کہ اونٹاریو صوبے کے شہر گویلف میں نوجوان دلہن جو ڈو کے لباس کی زپ (دندانے دار فیتہ) اس وقت خراب ہو گئی جب جو ڈو کی ایک سہیلی زپ بند کرنے میں اس کی مدد کر رہی تھی۔ اس موقع پر کسی کو زپ ٹھیک کرنا نہیں آئی جس کی وجہ سے دلہن بے چاری شدید شرمندگی سے دوچار ہو گئی کیوں کہ شادی کی تقریب شروع ہونے میں چند گھنٹے رہ گئے تھے۔ سونے پر سہاگا یہ کہ شہر میں قریب کسی درزی کا بھی پتہ نہیں تھا۔ اس دوران کینیڈا میں 50 پناہ گزین شامی خاندانوں کی نگرانی کرنے والے ایک شخص نے بتایا کہ مذکورہ پناہ گزینوں میں ایک درزی بھی ہے۔

بہرکیف دلہن کے گھر والے "گوگل ٹرانسلیٹ" کی مدد سے شامی درزی ابراهيم خليل سے بات چیت میں اپنا مدعا بیان کرنے میں کامیاب ہو گئے۔ ابراہیم نے بہت تھوڑے سے وقت میں ہی مسئلہ حل کر ڈالا اور گوگل ٹرانسلیٹ کے ذریعے ہی دلہن کے گھر والوں سے کہا کہ "میں اپنے دل سے کینیڈا کے لوگوں کی مدد کرنا پسند کرتا ہوں"۔

خاتون کیمرہ مین لینڈسی کولٹر نے حلب سے تعلق رکھنے والے ابراہیم کی تصاویر اپنے کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کر لیں۔

"العربیہ ڈاٹ نیٹ" کو "سی ٹی وی نیوز" کی ویب سائٹ سے معلوم ہوا ہے کہ ابراہیم خلیل چار روز قبل ہی کینڈا پہنچا ہے۔ اس سے قبل اس نے 28 برس شام کے شہر حلب میں درزی کے طور پر کام کیا۔

خاتون کیمرہ مین نے اس واقعے کی تصاویر اپنے فیس بک کے صفحے پر پوسٹ کیں جن کو13 ہزار سے زیادہ مرتبہ پسند کیا گیا ، 6 ہزار مرتبہ شیئر کیا گیا اور تصاویر سے متعلق سیکڑوں تبصرے سامنے آئے۔