.

پاکستانی خاتون نے کڑھائی سے کپڑے پر قرآن پاک لکھنے کا اعزاز حاصل کر لیا

گھریلو خاتون نسیم اخیر نے کڑھائی سے 724 صفحات لکھے جن کا وزن 55 کلوگرام ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایک پاکستانی خاتون نے کڑھائی سے کپڑے پر قرآن پاک تحریر کرنے کا منفرد اعزاز حاصل کر لیا۔ نسیم اختر نے دعویٰ کیا کہ دنیا بھر میں وہ پہلی گھریلو خاتون ہیں جنہوں نے ہاتھ سے کڑھائی کر کے قرآن پاک لکھا ہے۔

معاصر عزیز "نوائے وقت" نے وسطی پنجاب کے ضلع گجرات کے علاقے گڑھی احمد آباد کی رہائشی نسیم اختر کے حوالے سے رپورٹ کیا ہے کہ ان کے دو بچے ہیں وہ پاکستان ائیر فورس میں ملازمت کرتی تھیں۔ دوران ملازمت وہ بچیوں کو قرآن پاک کی تعلیم بھی دیتی تھیں، اسی دوران انہیں قرآن پاک کی محبت نے مجبور کیا کہ وہ کوئی ایسا کارنامہ سرانجام دیں جو مسلمانوں کو حیران کر دے۔ اس نیک کام کا آغاز انہوں نے 1987 سے کیا اس دوران وہ گھریلو امور بھی سر انجام دیتی رہیں اور ساتھ ساتھ کڑھائی سے قرآن پاک بھی تحریر کرتی رہیں اور 32 سال بعد 2018 میں وہ اپنے اس نیک کام سے سرخرو ہو گئیں۔ نسیم اختر کا کہنا تھا کہ قرآن پاک کی تحریر کے دوران 32 سال انہوں نے با وضو وقت گزارا۔

انہوں نے حکومت پاکستان سے اپیل کی ہے کہ ان کا کپڑے پر لکھا گیا قرآن پاک پاکستان کی طرف سے سعودی عرب کی حکومت کو تحفے میں دیں اور وہ اپنے ہاتھوں سے یہ نایاب نسخہ مسجد نبوی میں رکھی۔ نسیم اختر نے حکومت پاکستان سے اپیل کرتے ہوئے دنیا بھر میں چیلنج کیا ہے کہ ان کا تیار کردہ قرآن پاک کا نسخہ دنیا بھر میں کہیں بھی نہیں ہے لہٰذا ان کا یہ کارنامہ گینز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں شامل کیا جائے۔

سفید کپڑے پر قرآن پاک لکھنے کے لئے انہوں نے پہلے فیصل آباد سے کپڑا منگوایا پھر برابر کٹائی کے بعد اس پر کڑھائی کا کام شروع کر دیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ قرآن پاک کی دس جلدیں ہیں۔ جبکہ ہر جلد میں تین سپارے ہیں جسکا مجموعی وزن 55 کلو گرام،22 انچ لمبائی، 15 انچ چوڑائی ہے جبکہ کالے اور گلابی رنگ ڈبل دھاگے کے 84 ڈبے اور 350 گز کپڑا پیپر پٹی استعمال کی گئی جسکے 724 صفحات ہیں۔