.

موسم سرما میں دسترخوانوں پر الباحہ کے مشہور روایتی پکوانوں کے ذائقے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سردیوں کی آمد ، بارش اور سرد موسم کے ساتھ ہی الباحہ کے لوگوں کے لیے مقبول پکوان مقامی اور غیر مقامی لوگوں کی توجہ کا مرکز بن جاتے ہیں۔ سعودی عرب کے جنوب مغربی علاقوں سے آنے والے باشندے گرمی کی تلاش میں یہاں پہنچتے ہیں اور ان لذیذ پکوانوں سے لطف اٹھاتے ہیں۔

اس تناظر میں الباحہ میں لوک داستانوں میں دلچسپی رکھنے والے سالم الزہرانی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ سعودی عرب میں لوگوں کے پکوان خاص روایات، رسم و رواج اور لوک داستانوں کے مطابق ایک شہر سے دوسرے شہر میں مختلف ہوتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ مقبول پکوان آب و ہوا، زندگی کی نوعیت اور ہر علاقے میں اگائے جانے والے پودوں کے معیار کے مطابق مختلف ہوتے ہیں۔ اس اعتبار سے سعودی عرب کو لذیذ پکوانوں سے مالا مال کردیا ہے۔

انہوں نے وضاحت کی کہ الباحہ کے علاقے میں مقبول پکوانوں کا زیادہ تر انحصار گندم پر ہے، خاص طور پر مقامی آبادی کے کھیتوں میں گندم کاشت کی جاتی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ جو، جوار، مکئی، باجرا اور اناج کی کچھ دوسری اقسام بھی کاشت کی جاتی ہیں۔

الزہرانی نے ذکر کیا ہے کہ الباحہ کے مقبول ترین پکوانوں میں دلیہ، روٹی اور عریکہ کے علاوہ دغابیس اور فتۃ شامل ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ پہلے مقبول پکوان گرمیوں کے موسموں سے سرد موسموں میں مختلف نہیں تھے۔ مگر اب سردیوں اور گرمیوں میں الگ الگ ہوگئے ہیں۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ عوامی کھابے مختلف اوقات کے کھانوں یعنی ناشے، دوپہر کے کھانے اور ڈنر پر پیش کیے جاتے ہیں۔

الباحہ کے ایک رہائشی فہد ناصر نے کہا کہ جیسے ہی سردیوں کی سرد راتیں آتی ہیں اور درجہ حرارت میں کمی آتی ہے الباحہ کے بہت سے باشندے کھانا پکانے اور کھانے کے لیے گرم مقامات کی طرف جاتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ان کے شہر میں سردیوں کی سب سے نمایاں غذا روٹی، دلیہ اور دبیز ہیں۔ اس کے علاوہ ایک ایسا پودا جو سردیوں میں زرعی زمینوں پر نظر آتا ہے اور اسے چن کر کھایا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں