سعودی خاندان کے جد امجد نے مملکت کی تاسیس میں کیا کردار ادا کیا؟

اولین سعودی ریاست امام محمد بن سعود نے 1139ھ مطابق 1727 عیسوی میں قائم کی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پہلی سعودی ریاست کے قیام کا رشتہ ’ریاست مدینہ‘ اور بانیان کا رشتہ قبیلہ ’بنو حنیفہ‘ سے ملتا ہے۔ اس امر کا انکشاف سعودی خبر رساں ایجنسی ’ایس پی اے‘ نے یوم تاسیس کے شاہی فرمان کے اجرا پر اپنی مفصل رپورٹ میں کیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق پہلی سعودی ریاست کے دارالحکومت الدرعیہ کا قیام جزیرہ نمائے عرب کی سیاسی تاریخ کا بڑا پڑاؤ تھا۔ یہ جدید دور میں ریاست مدینہ کے احیا کی کوشش تھی۔ جو پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ وسلم نے مکہ سے یثرب (مدینہ) ہجرت کے بعد قائم کی تھی۔

قبیلہ بنو حنیفہ 430 ہجری میں عبید بن ثعالبہ کی قیادت میں وادی حنیفہ کے کنارے ’حجر الیمامہ‘ میں آباد ہوا تھا۔ حجر دیکھتے ہی دیکھتے الیمامہ کا سب سے بڑا شہر بن گیا تھا۔ پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ شاہ یمامہ ثمامہ بن اثال الحنفی کا قصہ تاریخ کی کتابوں میں مذکور اور مشہور ہے۔

سعودی عرب کی تاریخ
سعودی عرب کی تاریخ

امیر مانع بن ربیعہ المریدی شاہ عبدالعزیز بن عبدالرحمن کے بارہویں دادا، خادم حرمین شریفین شاہ سلمان کے تیرہویں اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے 14 ویں دادا تھے۔ مانع بن ربیعہ المریدی نے جزیرہ نمائے میں عرب طویل عرصے تک رائج تفرقے وانتشار کی وجہ سے پیدا ہونے والے جمود کو توڑا۔ انہوں نے 850ھ مطابق 1446 میں ’الدرعیہ‘ کو آباد کیا۔

پہلی سعودی ریاست امام محمد بن سعود نے 1139ھ مطابق 1727 عیسوی میں قائم کی۔ اس کا دارالحکومت الدرعیہ تھا۔ اس کا سلسلہ 1233ھ مطابق 1817 تک چلتا رہا۔ پہلی سعودی ریاست کے بعد امام ترکی بن عبداللہ بن محمد بن سعود نے دوسری سعودی ریاست قائم کی۔ اس کا سلسلہ 1240 سے 1309ھ بمطابق 1824 تا 1891 تک چلتا رہا۔

پھر تیسری سعودی ریاست شاہ عبدالعزیز آل سعود نے 1319ھ 1901 میں قائم کی۔ جو ان دنوں شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور شہزادہ محمد بن سلمان کے عہد میں ہر سطح اور ہر میدان میں ترقی و کامیابی کے جھنڈے گاڑھ رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں