سینی گال کے گول کیپرمینڈی چیلسی کو چھوڑ کر سعودی عرب کے الاہلی کلب میں شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سینی گال کے گول کیپر ایڈورڈ مینڈی نے لندن کے چیلسی فٹ بال کلب کو چھوڑ کر سعودی عرب کے الاہلی کلب میں شمولیت اختیار کرلی ہے۔

الاہلی نے ایک ٹویٹر پوسٹ میں کہا:’’تیرنگا کا شیر ہمارے گول کی حفاظت کرتا ہے‘‘۔کلب کا کہنا ہے کہ مینڈی کا کنٹریکٹ 2026 تک جاری رہے گا۔برطانوی میڈیا کے مطابق سعودی کلب گول کیپر کو ایک کروڑ 60 لاکھ پاؤنڈ (20.24 ملین ڈالر) ادا کرے گا۔

مینڈی نے 2020 میں سٹیڈ رینائس سے پریمیئر لیگ چیلسی میں شمولیت اختیار کی تھی اور 31 سالہ گول کیپر نے 2021 کے فائنل میں مانچسٹر سٹی کو 1-0 سے شکست دے کر چیمپیئنز لیگ کا ٹائٹل جیتنے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔

چیلسی کے جرمن مینجر تھامس ٹچل کے جانے کے بعد مینڈی کوچ گراہم پوٹر اور پھر فرینک لیمپارڈ کی قیادت میں کیپا اریزابالاگا کے ساتھ پیچھے رہ گئے۔

واضح رہے کہ جنوری میں کرسٹیانو رونالڈو کے النصر منتقل ہونے کے بعد سے سعودی پرو لیگ یورپ میں مقیم کھلاڑیوں کے لیے ایک پرکشش منزل بن گئی ہے۔

سعودی پرولیگ کے چیمپیئن الاتحاد کلب نے رواں ماہ کے اوائل میں بیلن ڈی اور کے فاتح کریم بینزیما سے معاہدہ کیا تھا جبکہ کلب نے بھی گذشتہ ہفتے چیلسی کے سابق مڈفیلڈر این گولو کانٹے کے اس اقدام کی تصدیق کی تھی۔

مینڈی سے پہلے ان کے اپنے ہم وطن کالیدو کولیبلی اور کانٹے نے الہلال کلب میں شمولیت اختیار کی تھی اور وہ سعودی عرب منتقل ہونے والے چیلسی کلب کے تیسرے کھلاڑی بن گئے ہیں۔

رواں ماہ کے اوائل میں سعودی پبلک انویسٹمنٹ فنڈ (پی آئی ایف) نے اسپورٹس کلبوں میں سرمایہ کاری اور ان کی نج کاری کے منصوبے کا اعلان کیا تھا جس میں لیگ کی چیمپیئن الاتحاد، الاہلی، النصر اور الہلال شامل تھے۔

پی آئی ایف چار کلبوں میں سے ہر ایک کے 75 فی صد حصص کا مالک ہے، جبکہ ان کے متعلق غیر منافع بخش اداروں میں اس کے 25 فی صد حصص ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں