غزہ کی صورتحال تباہ کن ، بڑے پیمانے پر بیماریاں پھیل رہی ہیں: ادارہ عالمی صحت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے کہا ہے کہ غزہ کی صورتحال تباہ کن ہوگئی ہے۔ اس سے پہلے کے بہت دیر ہو جائے عالمی برادری فوری طور پر کارروائی کرے ۔ عالمی ادارہ صحت کے مشرقی بحیرہ روم کے علاقائی ڈائریکٹر احمد المنظری نے کہا کہ صحت کی سہولیات کو نشانہ بنانا بین الاقوامی قوانین کی صریح خلاف ورزی ہے۔ 125 ٹن طبی سامان غزہ میں داخل ہوا جن میں سے اکثر کراسنگ پر ضائع ہوگیا۔ غزہ کی پٹی میں جو کچھ داخل ہوا وہ ضروریات کے سمندر میں گرا ہوا ہے۔ خاص طور پر شہریوں پر مسلسل اسرائیلی حملوں کے تناظر میں یہ امدادی سامان بھی تباہ ہو رہا ہے ۔
انہوں نے یہ بھی کہا کہ غزہ میں طبی شعبہ جنگ کی وجہ سے بیماروں اور زخمیوں کی دیکھ بھال کرنے سے قاصر ہوگیا ہے۔ اسرائیل ضروری طبی سامان کے داخلے میں بھی رکاوٹ ڈال رہا ہے۔
احمد المنظری نے پناہ گاہوں میں صحت مند لوگوں کے لیے اپنے خوف کے بارے میں بات کی جس میں فلسطینیوں میں بیماریاں پھیلی ہیں۔ ان بیماریوں میں نمونیا، جلد کے انفیکشن، پانی اور صاف خوراک کی عدم دستیابی کی وجہ سے آنتوں کے انفیکشن شامل ہیں۔ مسلسل بمباری کی وجہ سے فضائی آلودگی کی وجہ سے بھی بیماریاں بڑھتی جارہی ہیں۔
غزہ میں وزارت صحت کے ترجمان اشرف القدرہ نے اتوار کو اعلان کیا کہ 7 اکتوبر سے غزہ کی پٹی پر اسرائیلی جنگ میں شہید ہونے ولے فلسطینیوں کی تعداد بڑھ کر 15,523 ہو گئی اور 41,316 افراد زخمی ہیں۔
ترجمان نے غزہ میں ایک پریس کانفرنس میں مزید کہا کہ جمعہ کی صبح سے اب تک 316 ہلاک اور 664 زخمیوں کو نکالا جا چکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں