.

اسرائیلی سفارت کاروں پر حملوں کی پاداش میں دو ایرانیوں کو سزائے قید

سعید مرادی کوعمر قید جبکہ علی خزعی کو 15 سال قید کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تھائی لینڈ کی ایک فوجی عدالت نے زیرحراست دو ایرانی باشندوں کو بنکاک میں دھماکوں کے الزام میں قید کی لمبی سزائیں سنائی ہیں۔

یہ دھماکے گذشتہ برس کے آغاز میں بنکاک میں کیے گئے تھے، جن میں مبینہ طور پر اسرائیلی سفارت کاروں کو نشانہ بنایا گیا تھا، تاہم ان حملوں میں سفارت کار محفوظ رہے تھے البتہ ایک حملہ آور سعید مرادی کی دونوں ٹانگیں ضائع ہوگئی تھیں۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی "اے ایف پی" کے مطابق تھائی عدالت کی جانب سے 29 سالہ ایرانی سعید مرادی کو عمر قید جبکہ اس کے ساتھی 43 سالہ علی محمد خزعی کو 15 سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

خیال رہے کہ تھائی پولیس نے فروری 2012ء میں دو ایرانی باشندوں کو بنکاک سے حراست میں لینے اور ان کے ایک ساتھی کو ملائشیا میں گرفتار کرانے کا دعویٰ کیا تھا۔ تینوں ملزمان پر تھائی لینڈ میں اسرائیلی سفارت کاروں پرحملوں کی منصوبہ بندی کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

اسی دوران تھائی لینڈ میں متعین اسرائیلی سفیر نے کہا تھا کہ بنکاک میں دھماکے کی جگہ سے بموں کے جو نمونے ملے تھے وہ بھارت اور جارجیا میں استعمال ہونے والے بموں سے ملتے جلتے تھے۔

تھائی حکام نے بنکاک بم حملوں میں چار ایرانی باشندوں کو ماخوذ قرار دیا گیا تھا۔ جن میں سے دو کو بنکاک ہی سے حراست میں لیا گیا جبکہ ایک کوملائیشیا سے پکڑا گیا تھا۔ ان کے چوتھے ساتھی کے بارے میں معلومات نہیں مل سکی ہیں۔