.

منشیات رکھنے کے الزام میں معزول صدر محمد مرسی کا بیٹا گرفتار

اہل خانہ نے الزام مسترد کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری پولیس نے معزول صدر ڈاکٹر محمد مرسی کے صاحبزادے عبداللہ کو حشیش [بھنگ] سے بھرے سگریٹ رکھنے کے الزام میں حراست میں لیا ہے۔ دوسری جانب سابق صدر کے اہل خانہ نے الزام کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ منشیات رکھنے کا الزام انہیں بدنام کرنے کی گھناؤنی سازش ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سابق صدر کے صاحبزادے کی گرفتاری ہفتے کے روز شمالی قاہرہ میں القلیوبیہ پولیس کے ذریعے عمل میں لائی گئی۔ اطلاعات کے مطابق پولیس اپنے معمول کے گشت میں مصروف تھی کہ ایک مصروف شاہرہ پر انہیں ایک مشکوک کار کھڑی دکھائی دی۔ پولیس اہلکار کار کے قریب پہنچے تو اس میں دو نوجوان سوار تھے۔ پولیس کے پوچھنے پر پتہ چلا کہ ایک سابق صدر ڈاکٹر محمد مرسی کا فرزند عبداللہ اور دوسرا ایک مواصلاتی کمپنی کا ملازم محمد عماد ہے۔ پولیس نے ان کی جیبوں اور کار کی تلاشی لی۔ ان دونوں کی جیبوں سے نشہ آور بوٹی بھنگ سے بھرے سگریٹ برآمد ہوئے جس پر انہیں حراست میں لے لیا گیا ہے۔

معزول صدر کے ایک دوسرے صاحبزادے اسامہ مرسی نے اپنے بھائی کی گرفتاری پر بات کرتے ہوئے عبداللہ کے پاس حشیش کی موجودگی کو جھوٹ کا پلندہ قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ پولیس عبداللہ کو اغواء کرنا چاہتی تھی لیکن اس کے پاس اس کا کوئی جواز نہیں تھا، چنانچہ بلا جواز گرفتاری کے لیے منشیات کا الزام تھوپا گیا ہے۔ اسامہ نے کہا کہ یہ نہایت شرمناک الزام ہے کہ اس کے بھائی کے قبضے سے منشیات برآمد ہوئی ہے۔

مشرقی قاہرہ کے ایک مقامی عہدیدار نے بتایا کہ معزول صدر محمد مرسی کا بیٹا عبداللہ اپنے ایک دوست کے ہمراہ پیدل اپنے گھر کی جانب آ رہا تھا۔ پولیس کو ان پر شبہ ہوا جس پر ان کی تلاشی لی گئی تو ان کی جیبوں سے "بھنگ" سے بھرے دو سگریٹ برآمد ہوئے۔ پولیس کی تفتیش کے دوران عبداللہ نے منشیات رکھنے کا اعتراف کر لیا ہے۔