.

یمن: حوثیوں کے خلاف صنعا میں سول سوسائٹی کا احتجاجی مظاہرہ

تین دنوں میں 250 افراد ہلاک، مظاہرین کا جلد انتخابات کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے دارالحکومت میں ہفتے کے روز سماجی سطح سرگرم کارکنوں اور سول سوسائٹی کے افراد نے حوثی باغیوں کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا ہے۔ یہ مظاہرہ حوثیوں کے شہر پر قبضے کے خلاف کیا گیا۔

حوثیوں کے خلاف مظاہرہ کرنے والے مظاہرین صدر اور ملک کی فوجی کونسل سے ملک کو دہشت گردی سے بچانے کا مطالبہ کر رہے تھے۔ ان مظاہرین نے ملک میں وقت سے پہلے پارلیمانی اور صدارتی انتخابات کرانے کا بھی مطالبہ کیا۔

سول سوسائٹی سے متعلق افراد نے یہ احتجاجی مظاہرہ حوثیوں کے رہنماوں کی اس ریلی کے ایک روز بعد کیا، جس میں حوثیوں نے صدر ہادی کو ایک یادداشت پیش کی تھی اور مطالبہ کیا تھا کہ دس دنوں میں نئی حکومت تشکیل دیں۔

حوثیوں نے اس ریلی کے موقع پر انتباہ کیا تھا اگر دس دنوں میں نئی حکومت نہ بنائی گئی تو حوثی اپنے لیے تمام آپشنز کو کھلا سمجھیں گے۔

واضح رہے ملک میں تصادم کے خاتمے اور قیام امن کے لیے اقوام متحدہ کے ذریعے ہونے والے حالیہ معاہدے کے تحت یمن میں پر امن سیاسی عمل پر زور دیا گیا ہے۔

یمن کے سکیورٹی حکام کا کہنا ہے کہ پچھلے تین دنوں کے دوران رادہ کے قصبے میں حوثیوں اور با اثر قبائل کی لڑائی میں 250 افراد مارے گئے ہیں۔

حوثییوں کی کارروائیوں سے ان دنوں ملک میں سخت بحرانی صورت حال پیدا ہو چکی ہے۔ ایک طرف ملک کو القاعدہ اور اقتصادی مشکلات کا بھی سامنا ہے۔ ایسے میں حوثیوں کی کارروائیوں نے مزید خرابی پیدا کر دی ہے۔