.

ایران مشرقِ وسطیٰ میں مداخلت کررہا ہے:سعودی وزیرخارجہ

ایران کی جانب سے خطے میں مداخلت پر سعودی عرب خاموش تماشائی نہیں بنا رہے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزیرخارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ ایران واحد ملک ہے جو مشرق وسطیٰ کے امور میں مداخلت کررہا ہے اور دہشت گردی کی حمایت کررہا ہے۔

وہ قاہرہ میں مصری وزیر خارجہ سامح شکری کے ساتھ اتوار کو ملاقات کے بعد مشترکہ نیوز کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔انھوں نے کہا کہ ایرن کی جانب سے خطے کے امور میں مداخلت پر ان کا ملک خاموش تماشائی نہیں بنا رہے گا۔

علاقائی امور کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے عادل الجبیر نے کہا کہ یمن اور شام میں جاری بحرانوں کے حوالے سے سعودی عرب اور مصر ایک دوسرے سے رابطے میں ہیں۔

اس موقع پر مصری وزیر خارجہ سامح شکری نے کہا کہ یمن بحران سے متعلق ان کے ملک کا موقف وہی ہے جو سعودی عرب کا ہے۔انھوں نے یمن میں حوثی باغیوں کے خلاف سعودی عرب کی قیادت میں فوجی اتحاد میں مصر کی شمولیت کے عزم کا اعادہ کیا۔

انھوں نے سعودی عرب کے مشرقی شہر الدمام میں گذشتہ جمعہ کے روز ایک مسجد کے باہر خودکش بم حملے کی مذمت کی ہے۔اس بم دھماکے میں تین افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔سعودی سکیورٹی فورسز نے خودکش بمبار کی نماز جمعہ کے دوران مسجد پر حملے کی کوشش ناکام بنا دی تھی جس کی وجہ سے زیادہ جانی نقصان نہیں ہوا تھا۔اس خود کش بمبار نے مسجد کے باہر کھڑی گاڑیوں کے درمیان اپنی بارود سے بھری کار کو دھماکے سے اڑا دیا تھا۔