ٹرمپ کے مسلمان مخالف اقدامات پرایرانی اداکارہ کا ’آسکر’ کا بائیکاٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کی ایوارڈ یافتہ اداکارہ نے امریکا کے نو منتخب صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سے مسلمانوں کے خلاف اٹھائے گئے بعض اقدامات کے ردعمل میں ’آسکر‘ ایوارڈ کی تقریب میں شرکت کا بائیکاٹ کردیا ہے۔

خبررساں اداروں کے مطابق 33 سالہ ایرانی اداکارہ ترانہ علی دوستی جو فلم ’البائع‘ میں ہیروئن کا کردار ادا کرچکی ہیں، نے امریکا میں منعقد ہونے والی آسکر ایوارڈ کی تقریب میں شرکت کے بائیکاٹ کا اعلان کیا ہے۔

خیال رہے کہ فلم ’البائع‘ کو آسکر ایوارڈ کے لیے نامزد کیا گیا ہے اور اداکارہ علی دوستی کو ایوارڈ کی تقسیم کے لیے منعقدہ تقریب میں مدعو کیا گیا ہے۔

ایک بیان میں ایرانی اداکارہ نے کہا کہ انہیں افسوس ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ مسلمان ملکوں کے شہریوں کے امریکا میں داخلے پر پابندی عاید کر رہے ہیں۔

انہوں نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے ایرانیوں کے امریکا میں داخلےکے لیے ویزے کی شرط لازمی قرار دینے کو نسل پرستانہ قرار دیتے ہوئے اس کی شدید مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ چاہے امریکا میں مجھے کسی ثقافتی تقریب میں مدعو کیا جائے یا کسی اور کام کے لیے بلایا جائے۔ میں بہ طور احتجاج آسکر ایوارڈ کی تقریب سمیت کسی بھی دوسرے تقریب میں شرکت کا بائیکاٹ کروں گی۔

امریکا کے نئے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سات مسلمان ممالک کے شہریوں کے امریکا میں داخلے پر تیس روز کے لیے پابندی عاید کی ہے۔ ان میں ایران بھی شامل ہے۔

امریکی ٹی وی ’اے بی سی نیوز‘ سے بات کرتے ہوئے صدر ٹرمپ نے مسلمانوں کے خلاف اپنے حالیہ اقدامات کا دفاع کیا۔ انہوں نے کہا کہ بعض مسلمان ملکوں کے باشندوں کے امریکا میں داخلے پر پابندی پورے عالم اسلام پر پابندی نہیں۔ ہم صرف ان ملکوں کےشہریوں کو روک رہے ہیں جن میں دہشت گردی بہت زیادہ ہے۔

یہ واضح رہے کہ ایرانی فلم "البائع" آسکر ایوارڈ کے لیے نامزد کی گئی ہے۔ اس فلم کے پروڈیوسر معروف ایرانی فن کار اصغر فرھادی ہیں۔ امریکا میں 26 فروری کو لاس اینجلس شہر میں آسکر ایوارڈ کی تقریب معقد کی جائے گی جس میں فلم ’البائع‘ کو بھی ایوارڈ کے لیے پیش کیا جائے گا۔ فرھادی کی ایک فلم ’انفصال‘ سنہ 2012ء میں آسکر ایوارڈ جیت چکی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں