.

شمالی کوریا کے ساتھ بات چیت "درست سمت" میں گامزن ہے : امریکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزارت خارجہ کی ترجمان ہیزر نوورٹ کا کہنا ہے کہ امریکا اور شمالی کوریا کے درمیان جوہری ہتھیاروں کی تلفی کے حوالے سے بات چیت میں پیش رفت سامنے آ رہی ہے اور یہ مذاکرات "درست سمت میں" گامزن ہیں۔

منگل کے روز ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ترجمان نے بتایا کہ جون میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ اُن کے درمیان ملاقات کے بعد پیونگ یانگ کے ساتھ پسِ پردہ جاری بات چیت نے طبعی امر کی صورت اختیار کر لی ہے۔

نوورٹ نے باور کرایا کہ "ہم سمجھتے ہیں کہ پسِ پردہ جاری ملاقاتیں، مذاکرات اور بات چیت یہ سب درست سمت میں متحرّک ہیں"۔

امریکی وزارت خارجہ کی ترجمان کا یہ تبصرہ پیر کے روز شمالی اور جنوبی کوریا کے اس اعلان کے بعد سامنے آیا ہے کہ وہ ستمبر میں پیونگ یانگ میں ایک سربراہ ملاقات کے انعقاد پر متفق ہو گئے ہیں۔

ہیزر ںوورٹ نے حالیہ طور پر جاری بات چیت اور اس کے مقام سے متعلق تفصیلات فراہم کرنے سے منع کر دیا۔

تاہم وہ امریکا کا یہ نقطہ نظر دہراتی رہیں کہ کِم جونگ اُن نے ٹرمپ کو آگاہ کیا ہے کہ وہ جوہری ہتھیاروں کی تلفی کے لیے تیار ہیں جو کہ ان مذاکرات کے حوالے سے امریکا کا مرکزی ہدف ہے۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ "صدر کم جونگ اُن کی یقین دہانی کے بعد ہم مکمل حُسن نیت کے ساتھ کوششیں جاری رکھیں گے تا کہ بات چیت کو آگے لے جایا جا سکے"۔