.

یو اے ای: برطانوی اسکالر میتھیو کو غیرملک کے لیے جاسوسی کے جُرم میں عمر قید کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات میں ایک عدالت نے برطانیہ سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹریٹ آف فلاسفی ( پی ایچ ڈی) کے ایک اسکالر میتھیو ہیجز کو جاسوسی کے جرم میں قصور وار قرار دے کر عمر قید کی سزا سنا دی ہے۔ان پر گذشتہ ماہ غیر ملک کے لیے جاسوسی کے الزام میں فردِ جرم عاید کی گئی تھی۔

31 سالہ میتھیو کو 5 مئی 2018ءکو دبئی کے ہوائی اڈے پر گرفتار کیا گیا تھا۔وہ برطانیہ کی ڈرہم یونیورسٹی سے ڈاکٹریٹ کررہے تھے اور 2011 ء میں عرب بہاریہ انقلابوں کے بعد یو اے ای کی خارجہ اور داخلہ سکیورٹی کی پالیسیوں پر تحقیق کررہے تھے۔

میتھیو خاندان کے ایک ترجمان نے اے ایف پی کو بتایا ہے کہ عدالت میں مقدمے کی سماعت صرف پانچ منٹ کے بعد ہی ختم ہوگئی تھی اور عدالت میں ان کا وکیل موجود نہیں تھا۔

برطانوی وزیر خارجہ جیرمی ہنٹ نے کہا ہے کہ ’’انھیں متحدہ عرب امارات کی عدالت کےاس فیصلے سے شدید صدمہ پہنچا اور مایوسی ہوئی ہے۔آج کا فیصلہ ایسا نہیں جس کی ہم برطانیہ کے ایک دوست اور قابل اعتماد شراکت دار ملک سے توقع کرتے تھے۔یہ فیصلہ ہمیں کرائی گئی یقین دہانیوں کے بھی منافی ہے‘‘۔

یو اے ای کے اٹارنی جنرل نے میتھیو ہیجز پر ایک غیر ملک کے لیے جاسوسی ، ملکی فوج ، سیاست اور ریاست کی اقتصادی سکیورٹی کو نقصان پہنچانے کا الزام عاید کیا تھا۔ان کے خلاف معلومات اکٹھی کرنے اور ان کا ایک غیرملکی ایجنسی ۔۔۔برطانوی حکومت ۔۔کے ساتھ تبادلہ کرنے پر فرد ِ جرم عاید کی گئی تھی۔