.

یمن:بارودی سرنگین ناکارہ بنانے کے پانچ غیرملکی ماہرین دھماکے میں ہلاک

مارے گئے دو ماہرین کا تعلق جنوبی افریقا اور تین کا یورپی ممالک کروشیا ، بوسنیا اور کوسوو سے تھا، ایک برطانوی ماہر زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں بارودی سرنگیں ناکارہ بنانے کے پانچ ماہرین ایک دھماکے میں ہلاک ہوگئے ہیں۔سعودی عرب کے شاہ سلمان انسانی امداد اور ریلیف مرکز نے بتایا ہے کہ ان کا تعلق جنوبی افریقا اور بعض یورپی ممالک سے تھا اور وہ بارودی سرنگیں تلف کرنے کی ایک کارروائی کے دوران میں مارے گئے ہیں۔

کے ایس ریلیف نے سوموار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ یمن کے وسطی صوبے مآرب میں ایک گاڑی میں بارودی سرنگیں لاد کر تلف کرنے کے لیے لے جائی جارہی تھیں ،اس دوران میں وہ گاڑی میں بارودی سرنگیں دھماکے سے پھٹ گئیں جس سے جنوبی افریقا سے تعلق رکھنے والے دو ماہرین مارے گئے ہیں۔ تین یورپی مہلوکین میں سے ایک کا تعلق کروشیا ، ایک کا بوسنیا اور ایک کا کوسوو سے تھا۔دھماکے میں ایک برطانوی شہری زخمی ہوگیا ہے۔

یمن میں حوثی شیعہ باغیوں نے اپنے زیر قبضہ علاقوں میں جگہ جگہ بارودی سرنگیں بچھا رکھی ہیں اور انھوں نے یمنی فوج سے شکست کے بعد بالخصوص راہ فرا ر اختیار کرتے ہوئے فارموں اور شاہراہوں پر بارودی سرنگیں بچھائی ہیں جنھیں اب کے ایس ریلیف کی مدد سے عالمی ماہرین تلف کررہے ہیں۔

یمن نے بارودی سرنگوں پر پابندی کے معاہدے پر دستخط کررکھے ہیں ۔اس معاہدے پر 1999ء میں عمل درآمد کا آغاز ہوا تھا۔اس کا مقصد جنگ زدہ علاقوں کو بارودی سرنگوں سے پاک کرنا ہے اور انھیں شہری آبادی کے لیے محفوظ بنانا ہے۔