.

علاقائی ممالک ایران میں بد امنی میں ملوّث ہوئے تو انھیں خمیازہ بھگتنا پڑے گا: نائب صدر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے نائب صدر اسحاق جہانگیری نے خبردار کیا ہے کہ اگر علاقائی ممالک ان کے ملک میں حالیہ بدامنی میں ملوّث ہوئے تو انھیں سنگین نتائج بھگتنا پڑیں گے۔

ایران کی نیم سرکاری خبررساں ایجنسی فارس کے مطابق نائب صدر نے کہا:’’خطے میں بعض ممالک کو جان لینا چاہیے اگر یہ پتا چلا کہ انھوں نے ایران میں بدامنی پیدا کرنے میں مداخلت کی ہے تو پھر خطے میں انھیں چین سے جینے نہیں دیا جائے گا۔‘‘

ایرانی حکام نے حزبِ اختلاف کے جلاوطن گروپوں اور ملک دشمن قوتوں سے وابستہ ’’ٹھگوں‘‘ پر ملک میں بد امنی کا الزام کیا ہے۔ان حالیہ احتجاجی مظاہروں میں حصہ لینے کی پاداش میں قریباً ایک ہزار افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔

سپاہِ پاسداران انقلاب کا کہنا ہے کہ پیٹرول کی قیمت کے خلاف احتجاجی تحریک پر جمعرات تک قابو پالیا گیا تھا اور اب صورت حال پُرامن ہوچکی ہے۔ پاسداران کے ترجمان بریگیڈئیر جنرل رمضان شریف نے سابق شاہِ ایران کے حامیوں اور جلاوطن حزب اختلاف کے مسلح گروپ مجاہدینِ خلق پران مظاہروں اور توڑ پھوڑ کا الزام عاید کیا ہے اور کہا ہے کہ ’’امریکا ، سعودی عرب ،اسرائیل اور ان کے خفیہ اداروں نے ملک میں حالیہ بدامنی کو ہوا دینے میں مدد دی تھی۔‘‘

ایرانی صدر حسن روحانی نے بھی غیرملکیوں کو ایران میں حالیہ بد امنی اور احتجاجی مظاہروں کا ذمے دار قرار دیا تھا اور سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کا کہنا تھا کہ’’ ایران میں دشمن کو پسپا کردیا گیا ہے۔‘‘مگر انھوں نے اس دشمن کا براہ راست ذکر نہیں کیا تھا۔