.

امریکا اورسعودی عرب میں مضبوط تعلقات استوار ہیں: شہزادی ریما بنت بندر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

واشنگٹن میں متعیّن سعودی سفیر شہزادی ریما بنت بندر آل سعود نے کہا ہے کہ ’’امریکا اور سعودی عرب کے درمیان مضبوط ادارہ جاتی دو طرفہ تعلقات استوار ہیں اور یہ امریکا کی دونوں سیاسی جماعتوں کے درمیان اقتدار کے ادل بدل اور ان کے صدور کے آنے جانے سے متاثر نہیں ہوتے ہیں۔

انھوں نے اخبار الشرق الاوسط سے سوموار کو ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ ’’سعودی عرب اور امریکا کے درمیان تعلقات کا آغاز صدر روزویلٹ کے دور میں ہوا تھا۔وہ ڈیمو کریٹک صدر تھے۔اس کے بعد ری پبلکن پارٹی اور ڈیمو کریٹک پارٹی کے صدور برسراقتدار آتے رہے اور یہ تعلقات جاری رہے ہیں۔ اب ری پبلکن صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے دور میں دوطرفہ تعاون میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔‘‘

شہزادی ریما نے کہا:’’بین الاقوامی آرڈر میں تبدیلیوں کے باوجود تاریخی حقائق یہ ثابت کرتے ہیں کہ سعودی عرب خطے میں امریکا کا سب سے قریبی شراکت دار ہے۔‘‘

جب ان سے سوال پوچھا گیا کہ آیندہ بڑا چیلنج کیا درپیش ہوسکتا ہے؟انھوں نے کہا کہ ’’بدقسمتی سے آج سعودی عرب کو امریکا سے ہی بڑا چیلنج درپیش ہے۔بدقسمتی سے اس ( سعودی عرب ) کے خلاف روایتی تعصبات پائے جاتے ہیں۔‘‘

تاہم ان کا کہنا تھا کہ’’اس کے باوجود خواہ یہ امریکا ہے یا دنیا بھر،مملکت کے تشخص میں ایک بڑی تبدیلی رونما ہورہی ہے، سعودی عرب نے اپنی قیادت کے ویژن کے مطابق ترقی کا عمل جاری رکھا ہوا ہے۔‘‘