.

ترکی کے صدر طیب ایردوآن کرونا سے اپنا بچاو کیسے کرتے ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن خود کو کرونا وائرس سے بچانے کے لیے بہت زیادہ احتیاط برتے ہیں۔ اگرچہ ترکی اب تک کرونا کا صرف ایک کیس سامنے آیا ہے کہ تاہم صدر طیب ایردآن نے گذشتہ ہفتے برسلز میں یورپی رہ نمائوں سے ملاقات کے دوران ان سے فاصلہ برقرار رکھا۔ انہوں نے اجلاس میں موجود کسی لیڈر سے مصافحہ نہیں کیا بلکہ کچھ فاصلے سے اپنے سینے پر ہاتھ رکھ کر ان کے سلام کا جواب دیا۔

ترک صدر کی یورپی لیڈروں سے ملاقات کی ایک ویڈیو بھی سامنے آئی ہے۔ اس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ صدر ایردوآن اپنے ہمراہ ایک فوٹو گرافرکو رکھتے ہیں جو تھرمل کیمرے کی مدد سے پتا چلا سکتا ہے کہ صدر کے قریب موجود افراد میں سے کسی کو بخار تو نہیں۔

برسلز اجلاس میں بھی فوٹو گرافر نے تھرمل کیمرے صحافیوں اور سیاستدانوں کا معائنہ کیا۔ یہ پیش رفت ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب دوسری طرف ترکی میں پہلے کرونا وائرس کے مریض کی تصدیق کی گئی ہے۔

یہ پہلا موقع نہیں ہے جب ایردوآن نے کرونا وائرس سے اپنے آپ کو بچانے کے لیے اقدامات اٹھائے ہیں۔ 66 سالہ صدر ایردوآن نے رواں ہفتے ممتاز شخصیات سے مصافحہ کرنے سےگریز اور برسلز میں یورپی کونسل کے صدر چارلس مشیل اور انقرہ میں نئے سفیروں کے ساتھ ملاقاتوں کے دوران انہوں نے اپنے سینے پرہاتھ رکھ انہیں علیک سلیک کیا۔

بعد ازاں ایردوآن نے حکمران جسٹس اینڈ ڈویلپمنٹ پارٹی کے ممبران کو بتایا کہ ترکی اپنے تمام شہریوں کی حفاظت کے لیے مناسب اقدامات کررہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے اقدامات سے کوئی وائرس زیادہ طاقت ور نہیں۔